لاہور ،جمشید دستی کی نااہلی کے لیے دائر درخواست پر ان کے وکیل نے جواب داخل کروانے کے لیے 25 مئی تک کی مہلت طلب کر لی

جمعرات مئی 21:25

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 مئی2018ء) لاہورہائیکورٹ میں ایم این اے جمشید دستی کی نااہلی کے لیے دائر درخواست پر جمشید دستی کے وکیل نے جواب داخل کروانے کے لیے 25 مئی تک کی مہلت طلب کر لی عدالت نے ایم این اے کے وکیل کی استدعا منظور کرتے ہوئے الیکشن کمشن کو بھی 25 مئی تک جواب داخل کروانے کی ہدایت کر دی تفصیلات کے مطابق جسٹس جواد حسن نے مظفر گڑھ حلقہ این اے 178 کے ووٹر فاروق احمد خان کی متفرق درخواست پر سماعت کی درخواستگزار کی جانب سے ایڈووکیٹ اے کے ڈوگر عدالت میں پیش ہوئے درخواستگزار وکیل نے عدالت کو بتایا کہ جمشید دستی کی نااہلی کے لیے دائر درخواست 3 سال سے زائد عرصے سے ہائیکورٹ میں زیر سماعت ہے تاہم اب اسمبلیاں تحلیل ہونے والی ہیں مقدمے کا فیصلہ نہ ہوا تو اتنی جدوجہد رائیگاں چلی جائے گی درخواستگزار وکیل نے موقف اختیار کیا کہ جمشید دستی نے حقائق چھپا کر ایم این اے منتخب ہوئے اور سپریم کورٹ نے ان کے خلاف فیصلہ بھی دیا درخواستگزار وکیل نے قانونی نقطہ اٹھایا کہ جمشید دستی صادق اور امین نہیں ہیں اور ا?رٹیکل 62 اور 63 پر پورے نہیں اترتیدرخواستگزرا وکیل نے نشاندہی کی کہ عدالت عظمی کے فیصلوں کے مطابق جمشید دستی ایم این اے منتخب ہونے کے اہل نہیں ہیں، وکیل نے استدعا کی کہ عدالت جمشید دستی کو نااہل قرار دینے کا حکم دے وکیل نے نشاندہی کی کہ عدالت عالیہ جمشید دستی کی جانب سے جواب داخل نہ کروانے پر درخواست پر یکطرفہ کارروائی کا حکم بھی دے چکی ہے مگر تاحال درخواست ہر فیصلہ نہیں کیا جا سکا جمشید۔

(جاری ہے)

دستی کے وکیل نے عدالت سے جواب داخل کروانے کے لیے مہلت کی استدعا کی جسے عدالت نے منظور کرتے ہوئے سماعت 25 مئی تک ملتوی کر دی۔