فلسطین میں اسرائیلی جارحیت اور حب میں ہندو برادری کے 2 افراد کی ہلاکت پر سندھ اسمبلی میں مذمتی قراردادیں منطور

جمعرات مئی 22:14

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 مئی2018ء) فلسطین میں اسرائیلی جارحیت اور بلوچستان کے علاقے حب میں ہندو برادری کے دو افراد کی ہلاکت کے واقعہ کے خلاف دو علیحدہ مذمتی قراردادیں سندھ اسمبلی نے اتفاق رائے سے منظور کرلیں۔ دونوں قراردادوں کے محرک فنکشنل لیگ کے پارلیمانی لیڈر نند کمار گوکلانی تھے۔ قرارداد کی حزب اقتدار اور اختلاف کی جماعتوں نے بھی تائید کی۔

نند کمار گوکلانی نے ایک قرارداد کے زریعے بلوچستان حکومت سے صوبے میں بسنے والی ہندو برادری کو تحفظ فراہم کرنے اور حب میں پیش آنے والے واقعہ کی تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔ قرارداد میں کہا گیا ہے کہ اقلیتی برادری کے جے پال اور اسکے جواں سال بیٹے درشن لعل کے قتل پر اقلیتی برادری کو سخت تشویش ہے۔ حالیہ دنوں میں اس قسم کے واقعات میں اضافے سے ہندو برادری میں عدم تحفظ کا احساس پیدا ہورہا ہے۔

(جاری ہے)

بلوچستان حکومت نہ صرف اس گھنائونے واقعہ کی تحقیقات کرے بلکہ ہندو برادری کو تحفظ بھی فراہم کرے۔ نند کمار گوکلانی نے مزید کہا کہ ہندو پرامن برادری ہے وہ صوبے میں امن کے خواہاں ہیں۔ اس قسم کے واقعات سے ہماری برادری میں سخت تشویش پائی جاتی ہے۔ صوبائی حکومت فی الفور ایسے واقعات پر نہ صرف قابو پائے بلکہ اقلیتی برادری کو تحفظ فراہم کرنے کے لئے ٹھوس اقدامات اٹھائے۔ دوسری قرارداد کے زریعے فلسطین میں اسرائیلی جارحیت اور بربریت کی شدید الفاظ میں مذمت کی گئی قرارداد کے زریعے اقوام متحدہ سے نہتے فلسطینیوں پر مظالم کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا گیا۔ دونوں قراردادیں ایوان میں متفقہ طور ہر منظور کرلی گئیں۔