سیشن جج فتح جھنگ کامران کے حکم امتناعی کی دھجیاں اڑا دی گئیں

سویلین ایمپلائز کو آپریٹو ہائوسنگ سوسائٹی کے دفتر پر اسسٹنٹ کمشنر محمد وسیم نے تالے توڑ کر قبضہ کرلیا مجھے ڈپٹی کمشنر آفس کی طرف سے سوسائٹی کے معاملات درست کرنے اور آئندہ الیکشن کیلئے دو ماہ کیلئے ایڈمنسٹریٹر مقرر کیا گیا ہے، محمد وسیم کی آن لائن سے گفتگو

جمعہ مئی 18:29

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 مئی2018ء) حکم امتناعی کے باوجود سویلین ایمپلائز کوآپریٹو ہائوسنگ سوسائٹی کے دفتر پر اسسٹنٹ کمشنر محمد وسیم نے تالے توڑ کر دفتر پر قبضہ کرلیا۔ ایڈیشنل سیشن جج فتح جھنگ کامران نے سویلین ایمپلائز کوآپریٹو ہائوسنگ سوسائٹی کے صدر انصر گوندل کو 26 مئی تک ذمہ داریاں ادا کرنے کیلئے حکم امتناعی جاری کیا تھا۔

مذکورہ ہائوسنگ سوسائٹی کیلئے مقرر کئے گئے ایڈمنسٹریٹر اسسٹنٹ کمشنر محمد وسیم نے گزشتہ روز دفتر کے تالے توڑ کر اس پر قبضہ کیا۔ آن لائن کے رابطہ کرانے پر اسسٹنٹ کمشنر محمد وسیم کا کہنا تھا کہ مجھے ڈپٹی کمشنر آفس کی طرف سے سوسائٹی کے معاملات درست کرنے اور آئندہ الیکشن کیلئے دو ماہ کیلئے ایڈمنسٹریٹر مقرر کیا گیا ہے اور سوسائٹی کے عہدیداروں کے پاس جو حکم امتناعی ہے وہ سویلین ایمپلائز کوآپریٹو ہائوسنگ سوسائٹی فیز ٹو کیلئے ہے جبکہ ہمارا معاملہ فیز ون سے متعلق ہے۔

(جاری ہے)

دریں اثناء سوسائٹی کے صدر انصر گوندل کا کہنا ہے کہ ہمیں دونوں فیز کے ممبران نے مینڈیٹ دیا ہے لیکن ضلعی انتظامیہ ہماری مدت پوری ہونے سے قبل ہی اس پر قبضہ کرکے سوسائٹی کے فنڈز ہڑپ کرنا چاہتی ہے۔ انصر گوندل نے کہا کہ سوسائٹی کے ممبران نے فیز ون اور فیز ٹو کیلئے ہمارا انتخاب کیا ہوا ہے۔ اور یہ الیکشن اسلام آباد ضلعی انتظامیہ نے ہی کروائے تھے اس وقت یہ نہیں کہا تھا کہ فیز ون کی منتخب باڈی کوئی اور ہوگی اور فیز ٹو کی باڈی دوسری ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ ماضی میں ایڈمنسٹریٹر مقرر کرکے سوسائٹی کے وسائل کو لوٹا گیا ہے اور الیکشن میں بھی دانستہ تاخیر کی جاتی رہی ہے۔’ مزید برآں اس حوالے سے اسسٹنٹ کمشنر محمد وسیم کا کہنا تھا کہ میری تعیناتی دو ماہ کیلئے ہے اور دو ماہ میں میں نے الیکشن کو یقینی بنانا ہے۔ اس حوالے سے محمد طیب ایڈووکیٹ کا کہنا ہے کہ عدالتی حکم کو دیکھنا ضروری ہے لیکن قانون کے مطابق عدالتی حکم ڈپٹی کمشنر کو اس کے کام سے نہیں روک سکتا البتہ ضروری ہے کہ عدالت کے جاری کئے گئے حکم کو باریکی سے دیکھا جائے۔