ہوشیار ہوجائیں، کراچی کے ساحل پر پکنک منانے والے شہری جلدی امراض میں مبتلا ہونے لگے

پاکستان کونسل آف ریسرچ ان واٹر ریسورسز کی چشم کشا رپورٹ جاری

جمعہ مئی 18:33

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 مئی2018ء) کراچی کے ساحل پر پکنک منانے والے ہوشیار ہوجائیں، پاکستان کونسل آف ریسرچ ان واٹر ریسورسز نے چشم کشا رپورٹ جاری کردی۔سیوریج کے پانی کی وجہ سے کراچی کے ساحل پرپکنک منانے والے شہری جلدی امراض میں مبتلا ہونے لگے۔۔پاکستان کونسل آف ریسرچ ان واٹر ریسورسز نے کراچی کے ساحلوں کے حوالے سے رپورٹ جاری کردی۔

(جاری ہے)

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ سیوریج کا پانی 4 مقامات پر سمندر میں چھوڑا جارہا ہے۔اس حوالے سے واٹر کمیشن کے سربراہ جسٹس (ر) امیر ہانی مسلم نے تحریری حکم نامہ جاری کردیا جس میں پی سی آر کے تحقیقی افسر ڈاکٹر مرتضیٰ کو سمندر میں چھوڑے جانے والے پانی کا جائزہ لینے کا حکم دیا۔حکم نامے میں یہ بھی کہا گیا کہ دو دریا اور سی ویو پر زیر تعمیرعمارتوں کا بھی مکینزم نہیں۔واٹر کمیشن کے سربراہ نے تحریری حکم نامے میں سیکریٹری ڈیفنس کو بھی وضاحت کے لیے پیر کے روز طلب کرلیا ہے۔

متعلقہ عنوان :