عطائیت کے خاتمہ کے نام پر طب اور طبیب کا خاتمہ کیا جا رہا ہے‘حکیم محمد شفیع طالب قادری

جمعہ مئی 18:45

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 مئی2018ء) اسلامی جمہوریہ پاکستان سے قدرتی و فطری طریق ہائے علاج کی جڑیں کاٹنے والوں کو قوم کبھی معاف نہیں کرے گی ، مغربی کمپنیوں کی ایماء پر دیسی طریقہ علاج کو ختم کر نے کیلئے نت نئے قوانین مرتب کئے جا رہے ہیں ، عطائیت کے خاتمے کا نام لے کر طب اور طبیب کا خاتمہ کیا جا رہا ہے ، حکماء برادری کے ساتھ ہیلتھ کے اداروں کا تعصبانہ رویہ ابھر کر سامنے آرہا ہے ۔

ان خیالات کا اظہار چیئرمین سپریم کونسل پروفیسر حکیم محمد شفیع طالب قادری نے لاہور پریس کلب کے باہر طب مفرد اعضاء کی نمائندہ جماعتوں کے مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔انہوںنے کہاکہ مطلوبہ کوائف کی موجودگی کے باوجود کوالیفائیڈ اطباء کے مطب سیل کئے جا رہے ہیں ۔ حکومت پنجاب اور وزارت صحت کی غلط پالیسوں نے طب نبوی ، علاج بالغذاء ، آکوپنکچر ، الیکٹرو ہومیو پیتھی اور اس جیسے دیگر مفید ترین طریقہ ہائے علاج کے معالجین کو عطائی قرار دے دیا ہے ۔

(جاری ہے)

اپنے بہترین اصول قوانین اور افادیت کی بناء پر مقبول ہونے والے طریق ہائے علاج طب مفرد اعضاء کے معالجین جن کی تعداد لاکھوں میں ہے کو علاج معالجہ سے روک دینا طب دشمنی کا واضح ثبوت ہے ۔ ہماری چیف جسٹس آف پاکستان سے اپیل ہے کہ وہ طب دوست قوانین بنائیں جن سے عظیم ا لشان طبی ورثہ کو درپیش خطرات کا خاتمہ ہو اور ملکی عوام کو بہترین علاج فراہم کیا جا سکے ۔