تعلیمی بورڈ حیدرآباد کے چیئرمین کا ناروا رویئہ ، ناقص پالیسیاں

آل پاکستان کلرک ایسوسی ایشن (ایپکا) بورڈ آفس یونٹ کی جانب سے بورڈ آفس کے سامنے احتجاجی مظاہرہ

جمعہ مئی 20:26

حیدرآباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 مئی2018ء) تعلیمی بورڈ حیدرآباد کے چیئرمین کے رویئے اور پالیسیوں کیخلاف آل پاکستان کلرک ایسوسی ایشن (ایپکا) بورڈ آفس یونٹ کی جانب سے بورڈ آفس کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا گیا اور چیئرمین کیخلاف نعرے بازی کی گئی۔ ملازمین بازوں پر سیاہ پٹیاں باندھے ہوئے تھے اور انہوں نے احتجاجاً بورڈ آف کے دفاتر کو تالے لگادیئے جس کے باعث روزمرہ کا کام متاثر ہوا۔

مظاہرین چیئرمین تعلیمی بورڈ محمد میمن کی برطرفی کا مطالبہ کررہے تھے۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ایپکا تعلیمی بورڈ یونٹ کے صدر اعجاز کاکا، جنرل سیکریٹری سلیم احمد ، قادر بھٹو ، اسلم راجپوت ، غلام رسول اور دیگر نے بتایا کہ کچھ عرصے قبل انہوں نے چیئرمین ڈاکٹر محمد میمن کو ایک چارٹر آف ڈیمانڈ پیش کیا تھا جس میں مطالبہ کیا گیا تھا کہ ڈیلی ویجز ملازمین کو مستقل کیا جائے ، 2014ء میں بھرتی کئے گئے ملازمین کے میڈیکل ، آوور ٹائم اور سالانہ ایڈوانس میں اضافہ کیا جائے اور کار ایڈوانس دیا جائے، مہلک بیماریوں میں مبتلا افراد کا خرچہ بورڈ انتظامیہ اُٹھائے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہاکہ صوبائی حکومت نے تعلیمی بورڈ کے چیئرمین ڈاکٹر محمد میمن کی حالیہ مدت ملازمت میں تین سال کی توسیع کرکے عدلیہ کے احکامات کی خلاف ورزی کی ہے ، انہوں نے کہاکہ ہائیکورٹ نے 2014ء میں احکامات دیئے تھے جن کے مطابق چیئرمین کے انتخاب کیلئے سرچ کمیٹی بنائی گئی تھی جو چیئرمین کا تقرر کرے گی اور چیئرمین کی مدت ملازمت میں توسیع کا اختیار بھی سرچ کمیٹی کو ہوگا لیکن ہائیکورٹ کے فیصلے کیخلاف ورزی کرتے ہوئے حکومت سندھ نے منظور نظر ڈاکٹر محمد میمن کو غیرقانونی طورپر تین سال کیلئے مدت ملازمت میں توسیع دی ہے۔ انہوں نے کہاکہ اگر فوری طورپر چیئرمین بورڈ کی مدت ملازمت میں توسیع کو منسوخ نہ کیا گیا تو پورے سندھ میں احتجاج کیا جائے گا۔