ماہ رمضان المبارک میں عمرکوٹ ضلع بھر میں پولیس کی مبینہ سرپرستی میں احترام رمضان آرڈیننس کی کھلے عام دھجیاں اڑا کر رکھ دی گئیں

بااثر شراب خانوں کے مالکان نے اپنے خفیہ متبادل ٹھکانوں سے شراب کی موبائل ہوم ڈلیوری سروس شروع کردی

جمعہ مئی 21:04

عمرکوٹ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 مئی2018ء) ماہ رمضان المبارک میں عمرکوٹ ضلع بھر میں پولیس کی مبینہ سرپرستی میں احترام رمضان آرڈیننس کی کھلے عام دھجیاں اڑا کر رکھ دی گئیں۔ بااثر شراب خانوں کے مالکان نے اپنے خفیہ متبادل ٹھکانوں سے شراب کی موبائل ہوم ڈلیوری سروس شروع کردی ۔دیگر منشیات گٹکا مین پڑی وغیرہ کی فروخت جارہی ہے۔ مذہبی حلقوں میں سخت اشتعال پھیل رہا ہے۔

مذہبی حلقوں نے ایس ایس پی عمرکوٹ سے سختی سے رمضان آرڈیننس پر عمل کرانے کا مطالبہ کیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق عمرکوٹ ضلع کے چاروں تعلقوں کنری ،سامارو ،پتھورو اور عمرکوٹ سمیت چھوٹے بڑے علاقوں میں احترام رمضان آرڈیننس کا کھلے عام مذاق اڑایا جارہا ہے۔ شہریوں میں پردے کی آڑ میں جگہ جگہ ہوٹلز کھانے پینے کے ٹھلے اور پان کی کیبن کھلی ہوئی ہے ۔

(جاری ہے)

ستم ظریفی کی حد تو یہ ہے کہ پولیس اپنے اپنے علاقوں میں احترام رمضان آرڈیننس پر عمل کرائے مگر افسوس کہ ’’15‘‘کے اہلکار مبینہ طور پر ان ٹھلے والوں ہوٹلوں کے مالکان اور شراب خانوں سے مبینہ بھتہ اور منتھلی وصول کرنے میں سرگرم عمل ہے۔ دوسری طرف عمرکوٹ اور دیگر تعلقوں میں موجود شراب خانوں کے بااثر مالکان نے شراب کا بھاری اسٹاک اپنے خفیہ متبادل ٹھکانوں پر منتقل کرکے بلیک پر شراب فروخت کی ہوم ڈلیوری سروس شروع کردی ہے۔

یہاں تک معلوم ہوا ہے کہ ان شراب خانوں کے مالکان نے ایک موبائل فون پر گاہک کو موبائل ہوم ڈلیوری سروس کے ذریعے اس کے ٹھکانے پر شراب پہنچا دی جاتی ہے۔ پولیس کی خاموشی اور بھتہ وصولی اور کسی قسم کی کوئی کاروائی نہ کرنے سے مذہبی حلقوں میں سخت اشتعال پھیل رہا ہے۔ علمائے کرام نے کہا ہے کہ یوں سرے عام رمضان آرڈیننس کا مذاق بنا کر عذاب الہی کودعوت نہ دی جائے۔ علمائے کرام نے آئی جی سندھ پولیس ڈی آئی جی میرپورخاص اور ایس ایس پی عمرکوٹ سے مطالبہ کیا ہے عمرکوٹ ضلع بھر میں احترام رمضان آرڈیننس پر سختی کیساتھ عمل کرایا جائے ورنہ مذہبی حلقے وسیع احتجاج اور شہر میں شٹر بند ہڑتال وغیرہ کی جائے گی۔