ٹنڈوالہیار گوٹھ منور خان لوند میں پانی کے تنازع پر تصادم، فائرنگ سے خوف وہراس پھیل گیا

لوند برادری کے درجنوں افراد کا زرعی زمین پر پانی نہملنے کے خلاف وہاں کے بااثر زمیندار چوہدری آصف آرائیں اور پولیس کے خلاف احتجاجی مظاہرہ

جمعہ مئی 21:09

ٹنڈوالہ یار (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 مئی2018ء) گذشتہ روز ٹنڈوالہ یار کے ڈاسوری تھانے کی حدود میں واقع گوٹھ منوخان لوند میں پانی کے تنازعے پر لوند برادری اور آرائیں برادری کے دو گروپوں میں تصادم شروع ہوگیا جس میں دونوں گروپوں کی جانب سے فائرنگ کا تبادلہ ہوا جس کے باعث علاقے میں خوف و حراس پھیل گیا اس اطلاع کے بعد پولیس کی بھاری نفری موقع پر پہنچ گئی پولیس کو دیکھتے ہی مشتعل افراد نے پولیس پر پتھرائو کرکے پولیس کو موقع سے بھگادی۔

(جاری ہے)

دیا بعد ازاں لوند برادری کے درجنوں افراد نے زرعی زمین پر پانی ناملنے کے خلاف وہاں کے بااثر زمیندار چوہدری آصف آرائیں اور پولیس کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا اس موقع پر مظاہرین نے بتایا کہ چوھدری آصف آرائیں نے ہمارے حصے کا پانی ہماری زرعی زمین پر معیا کرنے سے انکار کررہا ہے جس کے باعث ہماری زمین بنجر ہوگئی ہیں بعد اذاں پولیس نے چوھدری آصف آرائیں کی فریاد پر لوند برادری کے رہنماء غلام حیدر لوند سمیت 17افراد کے خلاف دہشت گردی ایکٹ کے تحت کیس داخل کرلیا کئے گئے کیس میں لکھا گیا ہے کہ غلام حیدر لوند اپنے دیگر ساتھیوں کے ہمراہ مسلح ہوکر میرے ذاتی واٹر کورس کو توڑ کر میری زرعی زمین پر جانے والا پانی چوری کیا اور میری جانب سے مذحمت کرنے پر انہوں نے فائرنگ شروع کردی اور میں نے مدد کے لئے پولیس کو اطلاع دی پولیس کے موقع پر پہنچی تو غلام حید رلوند اور اس کے ساتھیو ں نے پولیس پر بھی پتھرائوں شروع کردیا اس حوالے سے اس حوالے سے ایس ایس پی ٹنڈوالہ یار آفتاب نظامانی نے بتایا کہ یہ واٹر کورس چوھدری آصف آرائیں کا ذاتی واٹر کورس ہے جسے لوند برادری نے ان کی زرعی زمین پر جانے والا پانی روک کر واٹر کورس کو زربردستی توڑ دیا ہے جسے چوھدری آصف آرائیں کی زرعی زمین پر لگی کیلے ،آم ودیگر فصلوں کو کافی نقصان ہوا ہے انہوں نے بتایا کہ لوند برادری کے لوگوں نے واٹر کورس کو توڑتے ہوئے فائرنگ بھی کی ہے جس سے علاقے میں خوف و حراس پھیلا ہے انہوں نے بتایا ہے کہ ہم نے زمیندار چوھدری آصف آرائیں کی فریاد پر ڈاسوری تھانے میں کیس داخل کیا ہے اور اس کی تفتیش بھی کررہے ہیں ۔

متعلقہ عنوان :