بھارتی وزیراعظم مودی کے مقبوضہ کشمیر کے دورے کے خلاف وادی میں مکمل ہڑتال

حریت قیادت کی اپیل پر سرینگر لال چوک تک پرامن احتجاجی مارچ کیا جائے گا۔مودی کی آمد سے قبل ہی وادی میں سیکورٹی ہائی الرٹ

Mian Nadeem میاں محمد ندیم ہفتہ مئی 11:28

بھارتی وزیراعظم مودی کے مقبوضہ کشمیر کے دورے کے خلاف وادی میں مکمل ..
سرینگر(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔19 مئی۔2018ء) بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے مقبوضہ کشمیر کے دورے کے خلاف وادی میں مکمل ہڑتال، حریت قیادت کی اپیل پر سرینگر لال چوک تک پرامن احتجاجی مارچ کیا جائے گا۔۔مودی کی آمد سے قبل ہی وادی میں سیکورٹی ہائی الرٹ کردیا گیا، سرینگرمیں پولیس کی اضافی نفری تعینات ہے، جگہ جگہ رکاوٹیں کھڑی کر کے لوگوں اور گاڑیوں کی تلاشی لی جارہی ہے۔

حریت راہنماﺅں نے مودی کی آمد کے خلاف وادی میں مکمل ہڑتال، گھروں اور دیگر مقامات پر سیاہ جھنڈے لہرانے اور لال چوک تک احتجاجی مارچ کرنے کی کال دی ہے۔کٹھ پتلی انتظامیہ نے مارچ کی قیادت سے روکنے کے لیے حریت راہنما سید علی گیلانی،، یاسین ملک اور دوسرے راہنماﺅں کو گھروں اور تھانوں میں نظربند کر دیا ہے۔

(جاری ہے)

بھارتی وزیراعظم مودی کشن گنگا ہائیڈرو الیکٹرک پاور پروجیکٹ اور زوجیلاٹنل پروجیکٹ کا افتتاح کرینگے جس کے بعد سرینگر میں وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی سے ملاقات کریں گے۔

دوسری جانب مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے کشمیر کے دورے کے خلاف کشمیریوں نے بھرپور احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ جاری ہے جبکہ قابض بھارتی فورسز نے ضلع کپواڑہ میں مزید3 کشمیری نوجوانوں کو شہید کر دیا ہے۔کشمیر میڈیا سروس کے مطابق کشمیریوں نے سرینگر،، بڈگام ، گاندربل ، شوپیاں، اسلام آباد سمیت دیگر علاقوں میں بھارت اور اسرائیل کے خلاف زبردست احتجاجی مظاہرے کیے اور ریلیاں نکالیں۔

بھارتی فوجیوں اور پولیس اہلکاروں نے اسلام آباد قصبے اور دیگر علاقوں میں مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے پیلٹ گنز اور آنسو گیس کا بے دریغ استعمال کیا جس سے متعدد افراد زخمی جبکہ مزید 3نوجوان شہید ہوگئے۔دوسری طرف سید علی گیلانی ، میر واعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک پر مشتمل مشترکہ حریت قیادت نے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کی مقبوضہ وادی میں آمد کے خلاف مظاہروں کی کال دیتے ہوئے کہاکہ بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے مقبوضہ علاقے کے مجوزہ دورے کا مقصد عالمی برادری کو یہ جھوٹا تاثر دینا ہے کہ کشمیری عوام بھارتی جمہوریت کے تحت خوش ہیں حالانکہ بھارت نے مقبوضہ علاقے کو جہنم زار بنارکھا ہے۔

حریت راہنماﺅں اورتنظیموں نے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ اس موقع پر اپنے گھروں کی چھتوں اور دیگر مقامات پر سیاہ جھنڈے لہرائیں۔قابض انتظامیہ نے حریت راہنماﺅں سیدعلی گیلانی ، محمد یاسین ملک ، محمد اشرف صحرائی سمیت دیگر کو مارچ کی قیادت سے روکنے کے لیے گھروں یا تھانوں میں نظر بند کر دیا جب کہ دوسری طرف آزادکشمیر کے دارلحکومت مظفرآباد میں چیئرمین پاسبان حریت عزیر غزالی کی کال پر آزادکشمیر بھر سمیت مظفرآباد میں یوم سیاہ کے طو ر پر منانے کا اعلان کردیا اِس سلسلے میں مظفر آباد میں شہید مظفروانی چوک پر شدید احتجاجی مظاہرہ کیا گیا جس کی قیادت عزیر غزالی کررہے تھے۔