زخمی مظاہرین کو اردن منتقل کرنے اورامدادی سامان غزہ بھجوانے کی منظوری

دونوں اقدامات اردنی فرمانروا شاہ عبداللہ دوم کی خصوصی درخواست پر کیے گئے،اسرائیلی فوج

ہفتہ مئی 12:40

مقبوضہ بیت المقدس(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 مئی2018ء) اسرائیلی فوج نے کہا ہے کہ فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی میں مظاہروں کے دوران زخمی ہونے والے فلسطینیوں کو علاج کے لیے غزہ سے اردن جانے کی اجازت دی گئی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ اردن سے طبی سامان سے لدے ٹرک غزہ بھجوانے کی بھی منظوری دی گئی ہے۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق اسرائیلی فوج کے ایک ترجمان نے گزشتہ روز جاری کیے گئے اپنے ایک بیان میں کہاکہ یہ دونوں اقدامات اردنی فرمانروا شاہ عبداللہ دوم کی خصوصی درخواست پر کیے گئے ۔

(جاری ہے)

خیال رہے کہ قابض اسرائیلی فوج نے فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی کی مشرقی سرحد پر 14 مئی کو احتجاج کرنے والے فلسطینیوں پر وحشیانہ حملے کیے تھے جن میں کم سے کم 62 فلسطینی شہری شہید اور ہزاروں کی تعداد میں زخمی ہوگئے تھے۔ یہ قتل عام اس وقت کیا گیا جب امریکا نے تل ابیب سے اپنا سفارت خانہ مقبوضہ بیت المقدس منتقل کرنے کی افتتاحی تقریب منعقد کی تھی۔گذشتہ روز غزہ کی پٹی سے اردنی شہریت رکھنے والے تین زخمیوں کو ایمبولینسوں میں اردن منتقل کیا گیا۔قبل ازیں اسرائیل نے 53 ٹن ادویات اور دیگر طبی سامان غزہ کی پٹی کے حوالے کیا تھا۔