مقررہ نرخوں سے تقریباً چالیس سے پچاس فیصد مہنگے داموں پر اشیائے ضرورت فروخت کی جارہی ہیں،خرم شیر زمان

ہفتہ مئی 16:59

مقررہ نرخوں سے تقریباً چالیس سے پچاس فیصد مہنگے داموں پر اشیائے ضرورت ..
کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 مئی2018ء) پاکستان تحریک انصاف کراچی کے جنرل سیکریٹری و سندھ اسمبلی میں پی ٹی آئی کے پارلیمانی لیڈر خرم شیر زمان نے سندھ فوڈ منسٹر اور کراچی کمشنر کو ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے ماہِ رمضان میں بنیادی ضروریاتِ زندگی کی اشیاء کی قیمتیں بڑھنے کی سخت مذمت کی ہے۔ مئی کے آغاز میں ہی ایم پی اے خرم شیر زمان نے بنیادی ضروریاتِ زندگی کی اشیاء کی قیمتیں کنٹرول کرنے کے حوالے سے ایک پریس ریلیز جاری کی تھی ، جس میں فوڈ منسٹر اور کراچی کمشنر کو تنبیہ کی گئی تھی کہ وہ ماہِ رمضان میں اس امر کا خاص خیال رکھیں۔

اس کے علاوہ انہوں نے ہول سیلرز اور رٹیلرز سے بھی اپیل کی تھی کہ وہ بنیادی ضروریاتِ زندگی کی اشیاء پر لوگوں کو ماہ رمضان میں خصوصی رعایت دیں تاکہ سب لوگ اس مقدس مہینے میں پرسکون ہو کر عبادت کرسکیں۔

(جاری ہے)

پارٹی سیکرٹریٹ ’’انصاف ہائوس‘‘ کراچی سے جاری کردہ اپنے خصوصی بیان میں انہوں نے کہا ہے کہ ماہِ رمضان اب شروع ہوچکا ہے اور کراچی کے لوگ بنیادی ضروریاتِ زندگی جیسے پھل اور سبزیاں مناسب قیمتوں پر حاصل کرنے میں دشواری کا سامنا کر رہے ہیں کیونکہ فروخت کار ضروری پرائس لسٹ کی پابندی نہیں کرتے اور مقررہ نرخوں سے تقریباً چالیس سے پچاس فیصد مہنگے داموں پر اشیائے ضرورت فروخت کرتے ہیں۔

انہوں نے مطالبہ کیا کہ وزیر اعلیٰ اور میئر کراچی کو ذاتی طور پر اس ناجائز منافع خوری کا نوٹس لیتے ہوئے فوری کارروائی کرنی چاہئے تاکہ بنیادی ضروریاتِ زندگی کی اشیاء کی قیمتیں کم ہوں ۔ انہوں نے کہا کہ ہم اس وقت رمضان کے آغاز میں ہیں اور اس معاملے کو درست کرنے کا ابھی موقع ہے جس سے صارفین کو ریلیف ملے گا۔موجودہ سندھ گورنمنٹ کی حکمرانی کی مدت میں اب کچھ ہی ہفتے بچے ہیں۔ ایم پی اے خرم شیر زمان نے اپیل کی کہ دفتر چھوڑنے سے قبل حکومت کو یہ ایک اچھا کام ضرور کرنا چاہئے۔ بصورتِ دیگر نگراں حکومت سے ہمیں امید ہے کہ اس سنجیدہ معاملے پر ضرور توجہ دی جائے گی۔