نئی طرز کی کرکٹ کھیلنے میں نہ جانے بی سی سی آئی کو کیا خوف ہے:ہربھجن سنگھ

ہفتہ مئی 16:58

نئی طرز کی کرکٹ کھیلنے میں نہ جانے بی سی سی آئی کو کیا خوف ہے:ہربھجن ..
نئی دہلی(ا ردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔19مئی 2018 ء) ڈے اینڈ نائٹ ٹیسٹ سے انکار پر بھارتی کرکٹ بورڈ کو کڑی تنقید کا سامنا ہے جس میں اب بھارتی کھلاڑی بھی شامل ہو گئے ہیں اور سابق آف سپنر ہربھجن سنگھ بھی خاموش نہیں رہ سکے جن کا کہنا ہے کہ نئی طرز کی کرکٹ کھیلنے میں نہ جانے بی سی سی آئی کو کیا خوف لاحق ہے۔ ایک تقریب میں موجود ہربھجن سنگھ کا میڈیا سے بات چیت میں کہنا تھا کہ گلابی گیند سے کھیلنا اتنا مشکل نہیں جتنا بظاہر دکھائی دیتا ہے اور چونکہ یہ ایک دلچسپ فارمیٹ ہے لہٰذا بھارت کو بھی لازمی ڈے اینڈ نائٹ ٹیسٹ کھیلنا چاہئے۔

بھارت کے دوسرے کامیاب ترین سپنر مانے جانے والے ہربھجن سنگھ کا کہنا ہے کہ ڈے اینڈ نائٹ ٹیسٹ میں دونوں ٹیموں کے پاس برابر کے مواقع ہوں گے اور اگر بھارتی ٹیم گلابی گیند کے خلاف بلے بازی کرتے ہوئے جلدی آﺅٹ ہو گئی تو کیا ہوا ؟۔

(جاری ہے)

اس کے پاس بھی تو حریف کو پریشان کرنے کیلئے موثر پیس باﺅلرز موجود ہیں۔37سالہ ہربھجن سنگھ نے کہا کہ آسٹریلیا کیخلاف ڈے نائٹ ٹیسٹ ایک چیلنج ہے جس کا سامنا کرنے میں کوئی خطرہ نہیں ہونا چاہئے کیونکہ جب بادلوں سے گھرے آسمان تلے انگلینڈ کا سامنا کیا جا سکتا ہے تو گلابی گیند سے آسٹریلیا کا مقابلہ کیوں نہیں ہو سکتا۔

واضح رہے کہ ہربھجن سنگھ کا بیان ایسے موقع پر سامنے آیا ہے جب بھارتی کرکٹ بورڈ کی ایڈمنسٹریشن کمیٹی کے چیف ونود رائے کی جانب سے بھی بی سی سی آئی کے ڈے اینڈ نائٹ ٹیسٹ نہ کھیلنے کی فیصلے پر کھل کر حمایت سامنے آچکی ہے۔ونود رائے کا کہنا تھا کہ اگربھارت آسٹریلیا کیخلاف سیریز جیتنے کیلئے گلابی گیند سے نہیں کھیلنا چاہتا تو اس میں کوئی غلط بات نہیں کیونکہ ہر ٹیم کا مقصد گراﺅنڈ میں اتر کر فتح کا حصول ہوتا ہے۔