زینب قتل کیس میں سزا یافتہ ملزم عمران کے خلاف 7 سالہ نور فاطمہ کے ساتھ زیادتی اور قتل کیس کے جیل ٹرائل میں گواہ طلب، سماعت 23 مئی تک ملتوی

ہفتہ مئی 19:33

زینب قتل کیس میں سزا یافتہ ملزم عمران کے خلاف 7 سالہ نور فاطمہ کے ساتھ ..
لاہور۔19 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 مئی2018ء) لاہور کی انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے قصور میں ننھی بچی زینب قتل کیس میں سزا یافتہ ملزم عمران کے خلاف 7 سالہ نور فاطمہ کے ساتھ زیادتی اور قتل کیس کے جیل ٹرائل میں گواہوں کو طلب کرتے ہوئے سماعت 23 مئی تک ملتوی کرنے کا حکم جاری کر دیا۔ انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت کے ایڈمن جج سجاد احمد نے زینب قتل کیس میں سزا یافتہ ملزم عمران کے خلاف نور فاطمہ کے ساتھ زیادتی اور قتل کیس پر سماعت کی۔

(جاری ہے)

عدالت نے مزید گواہان کو طلب کرتے ہوئے پراسیکیوٹر عبدالروف وٹو کو ہدایت کی کہ آئندہ سماعت پر مزید گواہوں کو پیش کیا جائے، ملزم عمران نے نور فاطمہ کے ساتھ زیادتی اور قتل میں صحت جرم سے انکار کیا تھا۔ سات سالہ نور فاطمہ کے ساتھ زیادتی اور قتل کے مقدمہ میں 12 مختلف دفعات شامل ہیں۔پولیس اور پراسیکیوشن نے 7 سالہ نور فاطمہ کے ساتھ زیادتی کیس میں 85 سے زائد صفحات پر مشتمل چالان عدالت پیش کر رکھا ہے۔ڈپٹی پراسیکیوٹر جنرل عبدالروف وٹو نے جیل ٹرائل میں دلائل دیے۔نور فاطمہ کے ساتھ زیادتی کا مقدمہ تھانہ صدر قصور میں درج ہے۔