خواتین کی عزت نہ کرنے اورسندھ کے عوام کی حق تلفی کرنے والے صوبائی وزراء جوتا دکھانے کے مستحق ہیں، نصرت سحرعباسی

اسمبلی میں ممتازجکھرانی کواس لیے جوتا دکھایا کہ اسے خواتین سے بات کرنے کی تمیز نہیں ہے پیپلزپارٹی کے وزراء کبھی خواتین ارکان کے شرم وحیا کروجیسے الفاظ استعمال کرتے ہیں تو کبھی انہیں چیمبرمیں بلانے کی بات کرکے خواتین کی بے عزتی کرتے ہیں، میڈیا سے بات چیت

ہفتہ مئی 20:05

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 مئی2018ء) مسلم لیگ فنکشنل کی رکن سندھ اسمبلی نصرت سحرعباسی نے کہاہے کہ خواتین کی عزت نہ کرنے اورسندھ کے عوام کی حق تلفی کرنے والے صوبائی وزراء جوتا دکھانے کے مستحق ہیں اسمبلی میں ممتازجکھرانی کواس لیے جوتا دکھایا کہ اسے خواتین سے بات کرنے کی تمیز نہیں ہے پیپلزپارٹی کے وزراء کبھی خواتین ارکان کے شرم وحیا کروجیسے الفاظ استعمال کرتے ہیں تو کبھی انہیں چیمبرمیں بلانے کی بات کرکے خواتین کی بے عزتی کرتے ہیں ۔

سندھ اسمبلی اجلاس کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے نصرت سحرعباسی نے کہاکہ اسمبلی فلورپرہم نے پیپلزپارٹی حکومت کی دس سالہ کارگردگی کے بارے میں استفسارکیا ہرصوبائی وزیرکی ذمہ داری ہے کہ وہ اپنی کارگردگی ایوان میں بیان کرے کہ اس کی وزارت نے عوام کے لیے کیا کام سرانجام دیے اورسندھ کی عوام کوکیا دیا ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے جب وزراء اپنی کارگردگی بتانے سے عاجز ہوتے ہیں اس لیے کہ انہوں نے کچھ کام کیا ہی نہیں ہوتا تو اسمبلی میں سوال پوچھنے پر کھڑے ہوکرخواتین کوبے عزت کرتے ہیں ان کی شرم وحیا پربات کرتے ہیں ان پرجملے بازی کرتے ہیں اورکبھی خواتین ارکان کوچیمبرمیں بلانے کی بات کرتے ہیں انہوں نے کہاکہ پیپلزپارٹی کے چارسے پانچ ایسے وزیرہیں جو خواتین ارکان کے لیے ہربارکوئی نہ کوئی نامناسب جملے بازی کرتے ہیں اورخواتین کی تذلیل کرنے کی کوشش میں لگے رہتے ہیں ہربارکہا گیا ہے کہ ان کی لیڈرشپ اس بات کا نوٹس لے مگر یہ اپنی روش سے باز نہیں آئے انہوں نے کہاکہ اس صورتحال میں یہ ضروری تھا کہ انہیں جوتا دکھایا جائے یہ اسی قابل ہیں جن کے نزدیک ماں بہن کی عزت نہ ہووہ اسی کے قابل ہیں۔

میں نے انہیں اس لیے انہیں جوتا دکھا یا کہ جب آپ کی لیڈرایک خاتون تھیں اورانہوں نے خواتین کی عزت کے لیے جدوجھد کی آپ اس کے منشورپربھی عمل کرنا ضروری نہیں سمجھتے ۔

متعلقہ عنوان :