پی پی رہنما کا کراچی کے سرکاری اسکول میں تعمیری کام رکوانے کا اعتراف،پی ٹی آئی نے اسکولوں کے کام کو سیاسی بنانے کی کوشش کی، سعید غنی

کراچی دنیا کا واحد شہر ہے جہاں ہاتھوں سے سیوریج لائنیں بند کی جاتی ہیں،جہاں ہندو اور عیسائی بھی زکواة اور فطرانہ دیتے تھے ، اب کراچی کے عوام ایم کیوایم کو سمجھ چکے ہیں، اسمبلی میں اظہار خیال

ہفتہ مئی 20:39

پی پی رہنما کا کراچی کے سرکاری اسکول میں تعمیری کام رکوانے کا اعتراف،پی ..
کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 مئی2018ء) پیپلزپارٹی کے رہنما اور صوبائی وزیر سعید غنی نے اعتراف کیا ہے کہ انہوں نے کلفٹن کے اسکولوں میں بیت الخلا کا کام جان بوجھ کر رکوایا۔۔سندھ اسمبلی کے اجلاس میں صوبائی وزیر سعید غنی نے اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ کلفٹن کے اسکولوں میں بیت الخلا کی تعمیر کا کام ہم نے رکوایا تھا۔ تحریک انصاف نے اسکولوں کے کام کو سیاسی بنانے کی کوشش کی اور ایک ایم پی اے نے اسکول ٹھیک کرنے کے نام پر پی ٹی آئی کے ہینڈ بل تقسیم کئے جس پر میں نے اعتراض کیا اور بچیوں کے اسکولوں کا کام رکوا دیا۔

سعید غنی نے کہاکہ یہ بات جھوٹ ہے کہ لاڑکانہ کو 90 ارب روپے دیئے گئے بلکہ شہر کو زیادہ سے زیادہ 28 ارب روپے دیئے گئے، ہماری حکومت نے ریکارڈ ترقیاتی کام کروائے، ماضی میں اوطاقوں کے لئے اسکول بنا کر دیئے گئے، 1947 سے لے کر 2008 تک لاڑکانہ میں صرف ایک ڈگری کالج تھا لیکن اب 4 ہوگئے ہیں۔

(جاری ہے)

رہنما پی پی نے کہا کہ کراچی دنیا کا واحد شہر ہے جہاں ہاتھوں سے سیوریج لائنیں بند کی جاتی ہیں، یہ واحد شہر ہے جہاں ہندو اور عیسائی بھی زکواة اور فطرانہ دیتے تھے لیکن خدا کا شکر ہے کہ شہر میں امن ہے، اب کراچی کے عوام ایم کیوایم کو سمجھ چکے ہیں اسی لئے مہاجروں نے ان کے جلسے کو مسترد کردیا، ایم کیو ایم نے کراچی کے لئے 25 ارب روپے مانگ لئے لیکن مردم شماری پر بات نہیں کی۔

یہ بات طے شدہ ہے کہ انتخابات سے قبل یہ تمام لوگ پی آئی بی، بہادرآباد اور پی ایس پی سمیت دیگر ایک ہی ہوں گے لیکن اس کے باوجود عوام انہیں انتخابات میں شکست سے دوچار کریں گے۔