نواز شریف کے الیکشن کے قریب متنازع بیان دینے کی وجہ سامنے آ گئی

سابق وزیراعظم نواز شریف نے ممبئی حملوں سے متعلق متنازعہ بیان اینٹی اسٹیبلشمنٹ ووٹ حاصل کرنے کے لیے دیا،معروف صحافی سہیل وڑائچ کی گفتگو

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان اتوار مئی 11:29

نواز شریف کے الیکشن کے قریب متنازع بیان دینے کی وجہ سامنے آ گئی
لاہور(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔20 مئی 2018ء)  معروف صحافی سہیل وڑائچ کا کہنا ہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف نے ممبئی حملوں سے متعلق متنازعہ بیان اینٹی اسٹیبلشمنٹ ووٹ حاصل کرنے کے لیے دیا۔تفصیلات کے مطابق معروف صحافی سہیل وڑائچ کا کہنا ہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف نے ممبئی حملوں سے متعلق متنازعہ بیان الیکشن کے بلکل قریب دیا۔

اس بیان دینے کے پیچھے ان کو کوئی مقصد بھی ہو سکتا ہے۔سہیل وڑائچ کا کہنا تھا کہ پاکستان کی تاریخ میں انہی بنیادوں پر الیکشن ہوتے تھے۔لیکن اس بار توقع کی جا رہی تھی کہ پاکستان میں پرفارمنس کی بنیاد پر انتخابات ہوں گے۔کیونکہ تین بڑی سیاسی جماعتوں کی تین صوبوں میں حکومت تھی۔۔پاکستان پیپلز پارٹی اور تحریک انصاف کی بھی صوبوں میں حکومت تھی جب کہ پاکستان مسلم لیگ ن کی وفاق میں بھی حکومت تھی ۔

(جاری ہے)

اس لیے اس بار توقع کی جا رہی تھی کہ اگر حالات نارمل رہے تو اس بار پرفارمنس کی بنیاد پر الیکشن ہوں گے۔لیکن اب صورتحال مختلف ہے کیونکہ سابق وزیر اعظم نواز شریف نا اہلی کی سزا بگھت رہے ہیں اور ساتھ ہی ان کو کئی مقدمات کا بھی سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ان تمام حالات میں نواز شریف کو یہ راستہ بہتر نظر آیا کہ وہ اپنے آپ کو اینٹی اسٹیبلشمنٹ فورسز میں ظاہر کریں اور اس بنیاد پر اپنا ووٹ بینک بڑھائیں۔

جیسا کہ پہلے پرو پیپلز پارٹی فورسز ووٹ مانگتی تھی۔لیکن اب پیپلز پارٹی پنجاب میں اتنی مضبوط نہیں ہے۔اس لیے نواز شریف یہ جگہ لینا چاہتے ہیں۔اور ساتھ ہی نواز شریف اپنے مخالفین کو پرو اسٹیبلشمنٹ ثابت کرنا چاہتے تھے۔اور میرے خیال سے نواز شریف کو ممبئی حملوں سے متعلق متنازعہ بیان کے پیچھے یہی وجہ ہے کہ وہ عالمی طاقتوں کو یہ بات بتانے کی کوشش کر رہے ہیں کہ مجھے کرپشن کی بنیاد پر سزا نہیں دی جا رہی بلکہ مجھے تو اپنے دئیے گیے بیان کی وجہ سے سزا دی جا رہی ہے۔اس طرح نواز شریف کی کوشش تھی کہ وہ اس طرح کا متنازعہ بیان دے کر اینٹی اسٹیبلشمنٹ ووٹ حاصل کر سکیں۔ویڈیو ملاحظہ کیجئے: