موزوں پیکنگ پھلوں اور سبزیوں کو حیاتیاتی اعتبار سے زیادہ دیر تک جاندار اور زندہ رکھ سکتی ہے ،ماہرین

اتوار مئی 13:30

فیصل آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 مئی2018ء) : شعبہ پوسٹ ہارویسٹ کے زرعی ماہرین نے بتایا ہے کہ پیکنگ کا بنیادی مقصد پھلوں اور سبزیوں کی پیداوار کی موزوں طریقہ سے ترسیل و تقسیم ہے تا کہ یہ صحیح حالت میں صارف تک پہنچ سکیں جبکہ ناقص پیکنگ کی وجہ سے ہونے والے نقصانات میں بڑا حصہ غیر تسلی بخش کریٹوں / ڈبوں کی تیاری ہے تاہم پھلوں اور سبزیوںکی پیداوار میں اضافے کا فائدہ اسی صورت میں اٹھایا جا سکتا ہے جب پیکنگ موزوں ہونیزچونکہ پھل اور سبزیاں حیاتیاتی اعتبار سے جاندار اور زندہ ہوتی اور ہر زندہ شے کی طرح سانس لیتی ہیں لہٰذا اس عمل کے دوران کاربن ڈائی آکسائیڈ، پانی اور حرارت کا اخراج ہوتا ہے جو ان کی زندگی کا دوربڑھانے کیلئے انتہائی معاون ہے۔

انہوںنے بتایاکہ پیکنگ کا عمل اس دور زندگی کو محفوط بناتا اور دوران نقل و حرکت نقصان پہنچنے کے امکان کو کم سے کم کرتا ہے۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہاکہ کریٹ مال کو دوران سفر ہچکولوں کے اثرات سے محفوظ رکھتے ہیں جس سے پھل پر خراشیں نہیں آتیں۔ مزید برآں جراثیموں اور کیڑے مکوڑوں سے محفوظ رکھ کر ان کی تاز گی کو برقرار رکھا جاسکتاہے۔ انہوںنے کہا کہ کریٹ اتنامضبوط ہو کہ اس کے اندر رکھے گئے پھل اور اوپر رکھے گئے کریٹوںکے بوجھ سے متاثر نہ ہوں ۔

انہوںنے کہاکہ آج کے دور میں پیکنگ میں بھی کافی جدت آ گئی ہے جس کیلئے فائبر گلاس، پلاسٹک، تھرموپور اور سکڑنے والی پلاسٹک کی مدد سے پیکنگ کو کافی مضبوط بنا دیا گیا ہے جس سے نقل و حمل کے دوران کم نقصانات ہوتے ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ بیوپاری حضرات اور باغبان پیکنگ اس قسم کی کریں کہ پھل کو بآسانی ایک جگہ سے دوسری جگہ لے جایا جا سکے۔انہوںنے مزید کہاکہ پیکنگ ڈیزائن میٹریل کے انحصار ، پھل یا سبزی کے وزن اور سفر پر منحصر ہوتا ہے۔انہوںنے کہاکہ جراثیموں سے محفوظ رکھنے کیلئے محکمہ زراعت کی سفارش کردہ زہر کا استعمال بھی کیاجاسکتاہے ۔

متعلقہ عنوان :