قومی اسمبلی کا اجلاس دو روزہ کے وقفے کے بعد (آج)دوبارہ پارلیمنٹ ہائوس میں ہوگا

حکومت کی جانب سے بدھ کو قبائلی علاقوں کو خبیرپختونخوا میں ضم کرنے کیلئے مذکورہ بل پیش کا امکان

اتوار مئی 13:30

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 مئی2018ء) قومی اسمبلی کا اجلاس دو روزہ کے وقفے کے بعد (آج)پیر کو دوبارہ پارلیمنٹ ہائوس میں ہوگا ،ْ 23مئی بدھ کو حکومت کی جانب سے اپنے دو سیاسی اتحادیوں کی مخالفت کے باوجود قبائلی علاقوں کو خبیرپختونخوا میں ضم کرنے کیلئے مذکورہ بل پیش کا امکان ہے ۔ ذرائع کے مطابق قومی اسمبلی کے اجلاس کی صدارت سپیکر سر دار ایاز صادق کرینگے اور اجلاس رواں ہفتہ بھی جاری رہنے کا امکان ہے ۔

(جاری ہے)

ذرائع کے مطابق حکومت نے اپنے دو سیاسی اتحادیوں کی مخالفت کے باوجود قبائلی علاقوں کو خبیرپختونخوا میں ضم کرنے کیلئے مذکورہ بل کو قومی اسمبلی میں بدھ 23 مئی کو پیش کرنے کا فیصلہ کرلیا۔ذرائع کے مطابق فاٹا اصلاحات بل گزشتہ جمعہ کو اسمبلی میں پیش کیا جانا تھا تاہم اپوزیشن جماعتوں کے اعتراض کے پیش نظر یہ فیصلہ موخر کردیا گیا۔اپوزیشن جماعتوں کا موقف تھا کہ بل میں آئین کے تمام ضروری آرٹیکل شامل کیے جائیں ناکہ محض ضم کرنے کے لیے ادھورا بل پیش کیا جائے۔ذرائع نے بتایا کہ 23 مئی کو پیش کیا جانے والا فاٹا اصلاحات بل جامع اور مربوط ہوگا۔