بھارت کے کروڑوں مسلمانوں پر رمضان المبارک میں ظلم کی انتہاء کر دی گئی

بھارتی مسلمانوں کو شدید مشکلات،سحر وافطار میں بجلی کی بندش معمول بن گئی پانی کی ناقص سپلائی سے روزے داروں کو تکلیف،مساجد کے سامنے گنداپانی ،نمازیوں کو آنے جانے میں بھی مشکلات

اتوار مئی 15:40

بھارت کے کروڑوں مسلمانوں پر رمضان المبارک میں ظلم کی انتہاء کر دی گئی
لکھنو(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 مئی2018ء) بھارتی ریاست اتر پردیش میں رمضان المبارک کے مہینے میں مسلمانوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے ،،رمضان المبارک کا پہلاعشرہ جاری ہے لیکن بجلی کٹوتی اور پانی سپلائی کی پریشانی سے روزے داروں کو راحت نہیں مل پائی ۔ روزہ افطار کے وقت اور خاص کر سحری کے وقت بجلی کی سپلائی ضرور بند کردی جاتی ہے ۔ ریاست کے کئی مسلم محلوں میں پانی کی ناقص سپلائی سے بھی روزے داروں کو کافی تکلیف اٹھانی پڑرہی ہے ۔

(جاری ہے)

بھارتی ٹی وی کے مطابق ڈالی گنج وکھدرا میں عام طور پر پانی کی ناقص سپلائی سے لوگ پریشان ہیں ،اگر آتا بھی ہے تو بہت ہی کم وقت تک ، یا پھر اتنا گندہ اور آلودہ کہ اسے دیکھ کر طبیعت آسودہ ہوجاتی ہے ۔اس کے علاوہ گندگی اور نالوں کی صفائی نہ ہونے سے پانی نکاسی بھی نہیں ہو پارہی ہے ،جس کے سبب نالیوں کا پانی سڑکوں اور راستوں میں آجاتا ہے اور نمازیوں کو مسجد جانا محال ہوجاتا ہے ۔پرانے لکھنو کے کئی لوگوں نے بتایا کہ ان کے محلوں میں تو بجلی کٹوتی سے پریشانی رہتی ہی ہے پانی کی قلت نے تو مزید مصیبت میں مبتلا کردیاہے ،حالانکہ جب نگر نگم کے افسران سے بات کی گئی تو ان کاکہنا تھا کہ رمضان کے موقع پر مسلم محلوں میں صفائی نظم چست درست ہے ۔