رمضان المبارک میںمہنگائی و گرانی میں اضافہ حکمرانوں کی ناکام پالیسیوں کا نتیجہ ہے، ڈاکٹر محمدا براہیم

اتوار مئی 17:30

کوئٹہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 مئی2018ء) جماعت اسلامی کے صوبائی نائب امیر ڈاکٹر محمدا براہیم نے کہا ہے کہ رمضان المبارک میںمہنگائی و گرانی میں اضافہ حکمرانوں کی ناکام پالیسیوں کا نتیجہ ہے اورملک میں مہنگائی و گرانی کا سیلاب رکتانظر نہیں آرہا ہے۔ غریب عوام فاقوں اور خود کشیاں کرنے پر مجبور ہیں جبکہ حکمران قومی خزانہ کو ذاتی ملکیت سمجھتے ہوئے من مرضی کے کاموں میں عوامی پیسہ پانی کی طرح بہا رہے ہیں ۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے رمضان المبارک میں بڑھتی ہوئی مہنگائی پر اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے اپنے ایک بیان میں کیا ۔انہوں نے کہاکہ رمضان المبارک میں حکمرانوں کی طرف سے عوام کو ریلیف دینے کے تمام دعوے ہمیشہ کی طرح ہوا ثابت ہوتے نظر آرہے ہیں بازاروں میں غریب عوام اشیاء ضروریہ سستی خریدنے کی کوشش میں مہنگے داموں خریدنے پر مجبور ہیں منافع خور غریب عوام کو دونوں ہاتھوں سے لوٹنے میں مصروف عمل ہیں ۔

(جاری ہے)

رمضان بازاروں میں درجہ دوم کی سبزیاں اور پھل فروخت کیے جارہے ہیں جو مختلف بیماریوں کا سبب بن رہے ہیں ۔ مرغی کاگوشت بھی ساڑے تین سوروپے کل فروخت ہورہا ہے دودھ دہی کی قیمتوں میں بھی خودساختہ اضافہ کیا گیا ہے نہوں نے کہاکہ مہنگائی اس قدر بڑھ گئی ہے کہ رمضان بازاروں کے علاوہ آٹا ، تیل ، چینی ، چاول ، سبزی ، گویا کہ ہر روز مرہ استعمال ہونے والی چیزوں میں دن بدن اضافہ ہو رہا ہے ۔

انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ پھل ، سبزیوں اور مرغی گوشت کی کو الٹی کو کنڑول کرنے کیلئے کنڑول کمیٹیوں کے تحرک کو یقینی کوبنایا جائے اور پرائس کنڑول کمیٹیوں کے ممبران کو بازاروں میں مستقبل بنیادوں پر اپنے فرائض سرانجام دینے کیلئے پابند کیا جائے تاکہ عوام کو حقیقی معنوں میں معیاری اور سستی اشیاء فراہم ہو سیکیں ۔