تحریک انصاف کے رہنمائوں کی ورکنگ باؤنڈری اور ایل او سی پر بلااشتعال بھارتی فائرنگ اور شیلنگ کی مذ مت

اتوار مئی 19:10

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 مئی2018ء) پاکستان تحریک انصاف کے سینئرمرکزی رہنما اعجازاحمد چوہدری اور مرکزی سیکرٹری جنرل آزاد کشمیرو ایم ایل اے غلام محی الدین دیوان نے بھارت کی جانب سے ورکنگ باؤنڈری سیالکوٹ اور آزاد کشمیر پر بلااشتعال فائرنگ اور شیلنگ کی شدید الفاظ میںمذ مت کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھار ت نہتے شہریوں اور آبادی کو مسلسل نشانہ بنا رہا ہے جو کہ قابل مذمت ہے ، یہ حقیقت سامنے آ چکی ہے کہ نوز شریف اور مودی دو جسم ایک جان ہیں،،میاں نواز شریف پر جب بھی کوئی آفت آتی ہے مودی ان کی مدد کو پہنچ جاتا ہے ،،نواز شریف کے ساتھ ساتھ جلد مودی بھی اپنے آنجام کو پہنچنے والا ہے ،،نواز شریف ممبئی حملوں کے متعلق بیان دے کربھنور میں پھنس چکے ہیں انہیں اس بھنور سے نکالنے اور نواز شریف کے بیان سے پیدا ہونے والی صورتحال سے توجہ ہٹانے کے لیئے بھارت نے ورکنگ باؤنڈری پر بلااشتعال فائرنگ اور شیلنگ کرکے معصوم شہریوں کو شہید کررہاہے ۔

(جاری ہے)

رہنمائو ںنے کہاکہ بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں ظلم و بربریت کے تمام ریکارڈ توڑ دیے ہے، انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں کی جا رہی ہے لیکن مسلم حکمران اور انسانی حقوق کی تنظیمیں خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے ، عالمی برادری بھارت پر دبائو ڈالے کہ وہ کشمیری عوام پر ظلم وز یادتی بند کرے، پاکستانی حکومت کی یہ ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے بین الااقوامی برادری کے آگے اس مسئلے کو اٹھائے ،۔

انہوں نے کہا کہ پاکستانی عوام کے دل کشمیری عوام کے ساتھ دھڑکتے ہے انشاء اللہ کشمیری عوام کی جدو جہد ضرور رنگ لائے گی،عالم برادری کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالی اور بے گناہ کشمیریوں کے قتل عام کا نوٹس لے۔۔انہوںنے کہا کہموجودہ حکمرانوں کی اتنی بھی جرات نہیں کہ وہ مودی کے سامنے کشمیریوںپر ہونے والے ظلم کے خلاف آواز بلندکرسکیں ،گجرات کا قصائی مودی مسلمانوں کا قاتل ہے ، کشمیری عوام 70 سالوں سے حق خود ارادیت کے لیے اپنی لاکھوں جانیںقربان کر رہے ہیں ،کشمیریوں کے حقوق بھارت نے سلب کر رکھے ہے ، تحریک انصاف کشمیری بھائیوں کی جدوجہد آزادی کے ساتھ ہے اور انہیں کسی موقع پر تنہا ہ نہیں چھوڑے گے اور پاکستانی قوم مظلوم کشمیری بہن بھائیوں کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑے ہیں، وہ دن دور نہیں جبکہ کشمیری عوام کو حقیقی آزادی نصیب ہوگی اورمودی کو منہ کی کھانی پڑے گی