ڈ یمز کی تعمیر میں مزید تاخیر ملک کو صحرا بنا دے گی: خواجہ حبیب الرحمان

اتوار مئی 19:10

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 مئی2018ء) ایران پاک فیڈریشن آف کلچر اینڈ ٹریڈ(آئی پی ایف)کے صدر خواجہ حبیب الرحمان نے کہا ہے کہ بھارت نے پا کستان کا پانی روکنے کیلئے سینکڑوں ڈیم بنا ڈالے ہیں مگر ہم کئی دہا ئیوں سے ایک ڈیم کی تعمیر پر بھی متفق نہیں ہو رہے،سیاست دان اس تکنیکی معاملے کو صو بوں کے حقوق سے منسلک کر نا چھوڑ دیں اور ہنگامی بنیادوں پر اتفاق رائے پیدا کر نے کی کوشش کر یں،جنگی بنیادوں پر 10 ملین ایکڑ فٹ کی گنجائش کے نئے ذخائر تعمیر نہ کئے گئے تو ملک ا گلے 7 برسوں تک پانی کی شدید کمی والے ممالک میں شامل ہوجائے گا، کا لا باغ ڈیم کی تعمیر میں مزید تاخیر ملک کو صحرا بنا دے گی۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے ملاقات کیلئے آ ئے کے پی کے کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ1947ء میں ملک میں فی کس پانچ ہزار مکعب میٹر پانی تھا جوااب ایک ہزار مکعب میٹر کی سطح تک رہ گیا ہے، ملکی جی ڈی پی میں زراعت کا حصہ21 فیصد سے زیادہ ہے جبکہ70 فیصد برآ مدات بھی زراعت سے منسلک ہیں جس کادر آمدار پانی پر ہے، تر بیلا ڈیم،، چشمہ ڈیم اور منگلا ڈیم کی پانی ذخیرہ کر نے کی استعداد میں25 فیصد کی کمی ریکارڈ کی جا چکی ہے جس میں ہر سال اضافہ ہو رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت ہنگامی بنیادوں پر ملک میں پانی کے ذ خائر تعمیر کر نے کی کوشش کرے تاکہ معیشت کو ممکنہ تباہی سے بچایا جا سکے۔ انہوں نے مزید کہا کہ پانی کی کمی کی وجہ سے زیر زمین پانی پر انحصار خطر ناک حد تک بڑھ گیا ہے،12سال میں آ بادی24 کروڑ سے بڑھ جائے گی جبکہ پانی کی کمی31 ملین ایکڑ فٹ بڑھ جائے گی جو ملکی سالمیت کیلئے سنگین خطرہ ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی مستقبل کی ترقی کا درآمدار آبی ذ خائر میں توسیع اور مناسب استعمال پر ہی