وقت آگیا ہے صوبوں کو مکمل خودمختیاری ، وسائل کی مالکی اور فیصلوں کے اختیارات دے کر بچایا جاسکتا ہے، سندھ نیشنل پارٹی

اتوار مئی 19:30

حیدرآباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 مئی2018ء) وقت آگیا ہے کہ صوبوں کو مکمل خودمختیاری ، وسائل کی مالکی اور فیصلوں کے اختیارات دے کر بچایا جاسکتا ہے۔ اب کسی بھی صورت میں قوموں کو طاقت کے بنیاد پر ایک نہیں رکھ سکتے اب فیصلہ ہونا چاہیئے کہ اسٹیبلشمینٹ کی ایسی سوچ ملک کو مضبوط کر رہی ہے یا کمزور۔ ان خیالات کا اظہار سندھ نیشنل پارٹی کے چیئرمین امیر بھنبھرو، وائس چیئرمین رمضان بلیدی اور مرکز رہنما سائیں بخش بنگلانی نے اپنے مشترکہ پریس بیان میں کیا۔

سندھ نیشنل پارٹی کے رہنمائوں نے مزید کہا کہ طاقت کا استعمال کرنے کے بجائے حقوق مانگنے والی قوموں کے مسائل کا سیاسی بنیادوں پر حل نکالے جائیں۔ اپنے ہی عوام کے ساتھ دشمنوں جیسا برتائو، ملکی ایکے کے لئے انتہائی نقصاندہ ثابت ہوگا۔

(جاری ہے)

ایک صوبے کی بالادستی اور وفاقی اداروں میں عددی اکثریت کی وجہ سے ملک میں شامل چھوٹے صوبوں نے ہمیشہ اپنے آپ کو دوسرے درجے کا شہری سمجھا ہے۔

ملک انتہائی نازک دور سے گذر رہا ہے اور اسٹیبلشمینٹ کو ملک بچانے کے لئے انصاف پر مبنی فیصلے کرنے ہونگیں۔ رہنمائوں نے مزید کہا کہ ملک میں شامل قوموں اور وفاق کے بیچ نیا سماجی معاہدہ وقت کی اہم ضرورت ہے، 18 ویں ترمیم کا فائدہ چھوٹے صوبوں کو تب تک نہیں مل سکتا جب تک وفاق کے نام پر بڑے صوبے پنجاب کو عددی اکثریت حاصل ہوگی۔ سینٹ کو مکمل بااختیار بنایا جائے، صوبوں اور وفاق کے بیچ اختلافات کو حل کرنے کے لئے فیڈرل کورٹ کا قیام لایا جائے اور ہر صوبے کی ہائی کورٹ کو سپریم کورٹ کا درجہ دیا جائے۔

ایس این پی رہنمائوں نے مزید کہا کہ پسماندہ صوبوں خاص طور پر سندھ اور بلوچستان کے لئے فوری طور پر فیڈرل پیکج کا اعلان کرتے ہوئے سندھ اور بلوچستان کے نوجوانوں کو ترجیحی بنیادات پر پنجاب کے برابر ملازمتیں دی جائیں۔ وفاق پر ایک صوبے کی بالادستی ہونے کی وجہ سے وفاقی محکموں میں چھوٹے صوبوں کے عوام کومکمل نظرانداز کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ایک صوبے کی پارلیامینٹ میں عددی اکثریت ہونے کی وجہ سے ملک میں جمہوریت کا فائدہ صرف اور صرف بڑے صوبے کو ہوتاہے، جب کہ چھوٹے صوبے وسائل سے مالا مال ہونے کے باوجود بھی احساس کمتری کے شکار رہتے ہیں۔

18 ویں ترمیم میں یہ واضح ہے کہ سب صوبے اپنے وسائل کے خود مالک ہونگیں، چھوٹے صوبے اپنے حقوق سے محروم ہیں، ایسی جمہوریت کیسے چل سکتی ہے ، جس میںایک ہی صوبے کی سیٹیں باقی صوبوں کی سیٹوں سے زیادہ ہوں رہنمائوں نے کہا کہ وقت کی اہم ضرورت ہے کہ چھوٹے صوبوں کو مکمل حقوق دیکر ان کو وسائل کا مالک بناکر وفاق کو مزید مضبوط کیا جاسکتا ہے، اس لئے اگر سرائیکی صوبہ بنتا ہے تو یہ ملک کے لئے بہتر ہوگا ۔