کراچی میں قیامت خیز گرمی، پارہ 44 ڈگری سینٹی گریڈ تک پہنچ گیا

سمندری ہوائیں بند ہونے، شدید حبس اور گرمی کے باعث شہریوں کا جینا دشوارہوگیا

اتوار مئی 22:30

کراچی میں قیامت خیز گرمی، پارہ 44 ڈگری سینٹی گریڈ تک پہنچ گیا
کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 مئی2018ء) شہر قائد میں جھلسادینے والی گرمی نے روزے داروں کو نڈھال کردیا، اتوارکو پارہ 44ڈگری سینٹی گریڈ تک پہنچ گیا،قیامت خیز گرمی کے باعث لوگ بلبلا اٹھے۔محکمہ موسمیات کے مطابق کراچی میں اتوارکادن سال کا گرم ترین دنرہا۔ شہر میں سورج آگ برسانے لگا، قیامت خیز گرمی کے باعث لوگ بلبلا اٹھے۔ دوپہر 3 بجے کراچی کا درجہ حرارت 44 ڈگری سینٹی گریڈ تک پہنچ گیا، جبکہ گرمی کی شدت (ہیٹ انڈیکس)47ڈگری محسوس کی گئی اور ہوامیں نمی کا تناسب 15 فیصد سے بھی کم ریکارڈ کیا گیا۔

سمندری ہوائیں بند ہونے، شدید حبس اور گرمی کے باعث شہریوں کا جینا دشوارہوگیا۔شدید گرمی،، ہوا، پانی کی بندش اورکے الیکٹرک کی جانب سے فنی خرابیوں کے نام پر طویل اور غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ نے رمضان المبارک کے ابتدائی ایام میں لوگوں کیلئے مشکلات بڑھادیں۔

(جاری ہے)

گرم موسم کے باعث شہر میں ویرانی اور سڑکوں پر سناٹا چھایارہا۔شہریوں نے گرمی سے بچنے کیلئے خود کو گھروں تک محدود رکھا۔

محکمہ موسمیات19 سی23مئی تک ہیٹ ویو الرٹ جاری کرچکا ہے، گزشتہ روز بھی کراچی کا درجہ حرارت 42 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا تھا۔ طبی ماہرین نے شہریوں کو دھوپ میں جانے سے گریز کرنے کامشورہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ اگر مجبورا جانا بھی پڑے تو چھتری استعمال کریں اورسرپرگیلاکپڑارکھیں۔ جب کہ صوبائی حکومت نے صورت حال سے نمٹنے کیلئے کراچی کی مقامی انتظامیہ کو خصوصی ہدایت کررکھی ہیں اس کے علاوہ ہیٹ اسٹروک کے پیش نظر شہر کے سرکاری ہسپتالوں میں ایمر جنسی نافذ ہے۔