مصری مبلغ کی مرغی کھانے سے روحانیت میں اضافہ کے متنازعہ اشتہار پر معذرت

عمرو خالد کو سوشل میڈیا پر کڑی تنقید کا سامنا،ان کی پولٹری کمپنی نے بھی اپنے فیس بک صفحے سے اس ویڈیو کو حذف کردیا

پیر مئی 13:25

قاہرہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 مئی2018ء) مصر کے ایک معروف مگر متنازع مبلغ عمرو خالد کی ایک پولٹری کمپنی کے مرغی کے گوشت کی تشہیر کے لیے اشتہار میں نموداری سے ایک نیا تنازع اٹھ کھڑا ہوا ہے اور سوشل میڈیا پر کڑی تنقید کے بعد ان مبلغ صاحب کو معذرت کرنا پڑی ہے۔عر ب ٹی وی کے مطابق عمرو خالد مصر کی ایک پولٹری کمپنی الوطنیہ کے اشتہار میں ایک خاتون کے ساتھ نمودار ہوئے تھے۔

اس میں وہ پہلے رمضان المبار ک کے دوران میں اچھی صحت کے فوائد بتاتے ہیں۔

(جاری ہے)

اس کے بعد خانہ داری کی ماہر آسیہ عثما ن صحت مند غذا کے فوائد بتاتی ہیں اور بالخصوص مرغی کا گوشت کھانے کے بارے میں بتاتی ہیں ۔عمرو خالد کو اس بیان پر سوشل میڈیا پر کڑی تنقید کا سامنا کرنا پڑا ہے اور اس کمپنی کو بھی مجبوراً اپنے فیس بٴْک صفحے سے اس ویڈیو کو حذف کرنا پڑا ہے۔

البتہ اس نے مذکورہ اشتہار کو نہیں ہٹایا ۔یہ کوئی پہلا موقع نہیں کہ ان مصری مبلغ صاحب نے اس طرح کا کوئی تنازع کھڑا کیا ہے۔وہ اس سے پہلے بھی اس طرح کے متنازع اور بے تکے بیانات جاری کرتے رہتے ہیں ۔ وہ سیٹلائٹ چینلز کے لیے ٹی وی کنکشن کی تنصیب سے متعلق ایک اشتہار میں بھی نمودار ہوئے تھے لیکن بعد میں انھوں نے اس اشتہار سے خود کو نکلوا لیا تھا۔

متعلقہ عنوان :