ہم ملبوسات کے ذریعے اپنی ثقافتی روایات و تہذیب کو دنیا بھر میں متعارف کروارہے ہیں ،معصومہ سبطین

پیر مئی 15:45

ملتان۔21 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 مئی2018ء) موسم کی تبدیلی کے ساتھ ہی خواتین کے ملبوسات میں بھی تبدیلی آجاتی ہے اور موسم کا رنگ ان کپڑوں میں جھلکتا نظرآتا ہے ،بدلتے موسم کے ساتھ خواتین نے بھی عید کی تیاری کے سلسلے میں بازاروں کا رخ کرکے لان،بریزے،کاٹن اورچکن کے کپڑوں کو زیب تن کرنا شروع کردیا ہے ۔

(جاری ہے)

’’اے پی پی ‘‘سے گفتگو کرتے ہوئے فیشن ڈیزائنر ومقامی بوتیک کی مالک معصومہ سبطین نے کہاکہ ڈریسز میں تبدیلی ہی فیشن ہے ،اگرآپ ایک ہی طرح کالباس زیب تن کرتے رہیں گے تو اس سے آپ کی شخصیت متاثرہوگی، فیشن آئے روز تبدیل ہوتا رہتا ہے،ماضی میں جھانکا جائے تو فیشن انڈسٹری اور اس میں کام کرنے والوں کے بارے میں اچھی رائے قائم نہیں کی جاتی تھی مگر وقت کے ساتھ ساتھ تعلیم اور شعور نے لوگوں کی رائے کوتبدیل کیایہی وجہ ہے کہ آج ہماری فیشن انڈسٹری میں نہایت عمدہ اور عالمی معیار کا کام ہورہاہے،ہم ملبوسات کے ذریعے اپنی ثقافتی روایات اور تہذیب کودنیا بھر میں متعارف کروا رہے ہیں۔

انہوں نے مزید کہاکہ آج کل مختصر لمبائی والی فراکس،انگرکھا سٹائل کے فراکس فیشن میں ان ہیں،پشواس کے روایتی انداز میں بھی مغربی گائون ڈریس کی شکل میں بھی مقبول ہورہے ہیں۔

متعلقہ عنوان :