مالیاتی نظام کی مہارت کے بغیر کسی کاروبار میں کامیابی ممکن نہیں، مالیات و اکائونٹ بارے آگاہی کیلئے سمیڈا کے

تربیتی پروگرام کلیدی اہمیت کے حامل ہیں، مقررین کا سمیڈا کے زیر اہتمام منعقدہ سیمینار سے خطاب

پیر مئی 15:45

لاہور۔21 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 مئی2018ء) مالیاتی نظام کی عمد ہ مہارت کے بغیر کوئی کاروبار کامیابی سے ہمکنار نہیں ہو سکتا ، نجی کاروبار شروع کرنے کے خوہشمند خواتین و حضرات کو مالیات اور اکاونٹ کی مناسب معلومات سے آگاہی کیلئے سمیڈا جیسے اداروں کے تربیتی پروگراموں میں شرکت کرنی چاہئے۔ ان خیالات کا اظہار مختلف مالیاتی امور کے ماہرین نے یہاں سمال اینڈ میڈیم انٹر پرائزز ڈویلپمنٹ اتھارٹی ’سمیڈا‘ کے زیر اہتمام فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز کے مقامی دفتر میں منعقدہ ایک سیمینار سے خطاب کر تے ہوئے کیا۔

کارپوریٹ جنرل سولیشنز ا ور ایف پی سی سی آئی کے اشتراک سے منعقدہ اس سیمینار کا موضوع’’کاروبارمیں مالیات اور اکائونٹنگ کے حوالے سے درپیش چیلنجز‘‘ تھا۔

(جاری ہے)

اس موقع پر خطاب کر تے ہوئے فضہ عمران نے کہا کہ وہ خواتین جو نیا کاروبار شروع کر رہی ہیں یا پہلے سے کوئی کاروبار کر رہی ہیں انہیں چاہیے کہ اپنے کاروبار کی کامیابی کو یقینی بنانے کیلئے فنانشل مینجمنٹ کا شعور ضرور حاصل کریں خاص طور پر کیش فلواور بک کیپنگ کے امور کو ضرور سیکھنے کی کوشش کریں۔

ایف پی سی سی آئی کے نمائندے اور ممتاز تاجر عظمت جاوید نے اپنے خطاب کے دوران شرکاء کو اپنے کاروباری تجربات کے بارے میں آگاہ کیا۔ قبل ازیں سمیڈا کی ڈپٹی جنرل مینیجر تانیہ بٹر نے اپنے خطبہئِ استقبالیہ میںبتا یا کہ حکومت اور سمیڈا کی سینئر مینجمنٹ خواتین میں کاروباری رجحان کو تقویت دیکر انہیں قومی معیشت کا مو،ْ ثر حصہ بنانے کی خواہاں ہے اور اس مقصد کیلئے سمیڈا میں ایک خصوصی ڈیپارٹمنٹ قائم ہے جو خواتین کو کاروبار ی تربیت فراہم کرنے کیلئے تربیتی پروگراموں کا انعقاد کر تا رہتا ہے۔

سیمینار سے معروف مالیاتی ماہر ٖفضہ عمران، عظمت جاوید اور سمیڈا کی ڈپٹی جنرل مینجر برائے ویمن انٹرپرینیورشپ ڈویلپمنٹ تانیہ بٹر سمیت مختلف ماہرین نے خطاب کیاجبکہ شرکاء میں کنیئرڈ کالج اور جامعہ نعیمیہ سمیت متعدد تعلیمی اداروں کی طالبات اور ویمن چیمبر آف کامر س اینڈ انڈسٹری سے وابستہ تاجر خواتین بڑی تعداد میں موجود تھیں۔

متعلقہ عنوان :