سندھ یونائیٹڈ پارٹی اور پاکستان تحریک انصاف کا مشترکہ اجلاس،

بدترین حکمرانی پر افسوس کا اظہار ایک دوسرے سے ہم خیالی اور ہم آہنگی کی وجہ سے سندھ کو ایک مشترکہ پلیٹ فارم مہیا کرنے کے لیئے سندھ کے عوام کے پاس جائیںگے،دونوں جماعتوں میں اتفاق

پیر مئی 17:15

سندھ یونائیٹڈ پارٹی اور پاکستان تحریک انصاف کا مشترکہ اجلاس،
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 مئی2018ء) سندھ یونائیٹڈ پارٹی اور پاکستان تحریک انصاف کا مشترکہ اجلاس پیر کو حیدرمنزل کراچی میں منعقد ہوا، جس میںسندھ یونائیٹیڈ پارٹی کے مرکزی صدر سید جلال محمود شاہ ، سینئیر نائب صدر سید زین شاہ، روشن علی برڑو اور امیر علی تھیبو، وودیگر نے شرکت کی، جب کہ پاکستان تحریک انصاف کی طرف سے ڈاکٹر عارف علوی، لیاقت علی خان جتوئی، افتخار حسین سومرو، مشتاق جتوئی اور خالد راجپرنے شرکت کی۔

اجلاس میں ملک اور باالخصوص سندھ میں بدعنوانی اور بدترین حکمرانی پر افسوس کرتے ہوئے کہا گیا کہ جب تک ایماندار قیادت اور جماعتیںاقتدار میں نہیں آئیں گی، تب تک کوئی بھی بہتری کی امید نہیں کی جاسکتی۔ گذشتہ دو سالوں سے دونوں جماعتوں کے مابین رابطہ رہا اور اسی کے نتیجے میں آج مشترکہ طور پر اس بات پر اتفاق ہوا کہ آنے والے 2018ء انتخابات میں دونوں جماعتیں سیٹ ایڈجسٹمینٹ کے تحت پورے سندھ میں متفقہ امیدوار لائیں گی۔

(جاری ہے)

دونوں جماعتوں کی قیادت نے اس بات پر اتفاق کیا کہ سندھ میں پیپلز پارٹی کی خراب حکمرانی اور کرپشن کی وجہ سے سندھ تباہ ہو چکا ہے اور بیروزگاری کی وجہ سے سندھ کے عوام بوکھ، بیروزگاری اور ذلت کی زندگی گذار رہے ہیں۔ ایس یو پی اور پی ٹی آئی کرپشن کے خلاف مسلسل جدوجہد کر رہی ہیں۔ ایک دوسرے سے ہم خیالی اور ہم آہنگی کی وجہ سے سندھ کو ایک مشترکہ پلیٹ فارم مہیا کرنے کے لیئے سندھ کے عوام کے پاس جائیںگے اور توقع کرتے ہیں کے سندھ کا باشعور عوام اپنے بہتر مستقبل اور شفاف حکمرانی کے لیئے ہمارا ساتھ دیگا۔

اجلاس میںمشترکہ طور پر یہ مطالبہ کیا گیا کہ آصف زرداری اور ان کے حواریوں کاالیکشن سے پہلے احتساب ہونا چاہیے جو کہ ملک کے وسیع تر مفاد اور شفاف جمہوریت کے لیئے نہایت لازم ہے۔