ایریگیشن کے بروقت پانی فراہمی کے دعوے صرف دعوے ثابت ہوئے ہیں، ٹیل کے عوام پینے کے پانی کیلئے ترس رہے ہیں، مولانا عبداللہ جتک

پیر مئی 17:15

ڈیرہ مرادجمالی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 مئی2018ء) جمعیت علماء اسلام بلوچستان کے نائب ونصیرآباد کے ضلعی امیر مولاناعبداللہ جتک نے کہاہے کہ ایریگیشن کا بروقت پانی فراہمی کے دعوے صرف دعوے ثابت ہوئے ہیں، ٹیل کے عوام زرعی آبادی دور پانی پینے کیلئے ترس رہے ہیں، پٹ فیڈر کینال پر دوایکسیئن کی تعیناتی زراعت دشمنی اور نصیرآباد کو بنجر بنانے کی سازش ہے، ان خیالات کا اظہار منجھوشوری میڈیاسے بات چیت کرتے ہوئے کہا ،مولاناعبداللہ جتک نے کہاکہ پٹ فیڈر کینال کی بحالی اور مقررپانی کا حدف کے حصول کیلئے تمام سیاسی قبائلی اور زمینداروں کو آپس کے اختلاف کو بھلاکرایک پلیٹ فام پرمتحد ہوکرجدوجہد کرنے کی ضرورت ہے کیونکہ زراعت کے بغیر نصیراباد میں ترقی وخوشحالی کے خواب ناممکن ہے، انہوں نے کہاکہ کینال پر دوایکسیئن کی تعیناتی زمینداروں کوریلیف دینے کے بجائے دشواریاں درپیش ہیں دونوں ایکسیئن کی من مانیوں سے زمینداروں کا نقصانات کا سامنا کرنا پڑتاہے، بلخصوص ٹیل کے زمینداروں کوپانی نہ ملنے کے باعث لاکھوں ایکڑز اراضیات غیرآباد ہونے کی وجہ سے مقروض ہوکرنقل مکانی پر مجبور ہوگئے ہیں، انہوں نے کہاکہ جمعیت زمینداروں کے نقصانات اور نصیرآباد کو بنجر بنانے کی سازشوں کو کسی صورت برداشت نہیں کرینگے اور ہرفورم پر ناانصافی پر آواز بلند کرینگے۔

متعلقہ عنوان :