روات ،نیو گھکڑ گرڈ اسٹیشنزٹرپ کرجانے کے باعث اسلام آباد ‘راولپنڈی کے متعدد علاقوں میں بجلی کی فراہمی گھنٹوں معطل رہی

0کے وی کالا شاہ کاکو ، راوی ، شالامار اور غازی گرڈ اسٹیشنز کی ٹرانسمیشن لائن پر فنی خرابی کے سبب متعدد گرڈ ا سٹیشنزکی سپلائی بند ،لاہور اورملحقہ علاقوں کو بجلی کی فراہمی میں تعطل کا سامنا آپریشنل عمل نے فوری کام کا آغاز کر کے مرحلہ وار بجلی کی سپلائی بحال کر دی، 220کے وی پیراں غائب پاور پلانٹ یارڈ میں فنی خرابی دور کرنے کیلئے کام جاری

پیر مئی 17:40

اسلام آباد/لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 مئی2018ء) 500کے وی روات گرڈ اور 500کے وی کے حامل نیو گھکڑ گرڈ اسٹیشن فنی وجوہات کی بناء پر ٹرپ کرجانے کے باعث جڑواں شہروں اسلام آباد اور راولپنڈی کے متعدد علاقوں میں بجلی کی فراہمی گھنٹوں معطل رہی ،دوسری جانب 220کے وی کالا شاہ کاکو ، راوی ، شالامار اور غازی گرڈ اسٹیشنز کی ٹرانسمیشن لائن پر فنی خرابی کے سبب متعدد گرڈ ا سٹیشنزکی سپلائی بند ہونے سے لاہور اور اس کے ملحقہ علاقوں کو بجلی کی فراہمی میں تعطل کا سامنا رہا ۔

ترجمان پاورڈویژن کے مطابق روات 500 کے وی گرڈ اسٹیشن فنی وجوہات کی بنا ء پر ٹرپ کر گیا ۔ اسی دوران 500کے وی نیوگھکڑ گرڈ اسٹیشن بھی ٹرپ کر گیا جس سے روالپنڈی اور اسلام آباد کے علاقوں میں بجلی کی فراہمی معطل ہو گئی ۔

(جاری ہے)

گرڈ اسٹیشنز ٹرپ کرنے کے فوری بعد انجینئرز اور دیگر عملے نے دونو ں گرڈز کی بحالی کے لئے کام شروع کر دیا اور مرحلہ وار اسلام راولپنڈی کے متاثرہ علاقوں میں بجلی بحال ہوتی رہی ۔

کئی گھنٹوں کی کاوشوں کے بعد گرڈ اسٹیشنز بحال ہونے سے متاثرہ علاقوں میں مکمل بجلی بحال ہو گئی جس سے عوام نے سکھ کا سانس لیا ۔گزشتہ روز 220کے وی کالا شاہ کاکو ، راوی ، شالامار اور غازی گرڈ اسٹیشنز کی ٹرانسمیشن لائن پر فنی خرابی کے سبب لیسکو کے متعدد گرڈ ا سٹیشنزکی سپلائی بند ہو گی ۔آپریشنل عملے نے خرابی دور کرنے کے لئے فوری کام شروع کر دیا اور وقفے وقفے سے گرڈز بحال کئے گئے ۔

ذرائع کے مطابق گرمی کی شدت کے باعث 500کے وی روات گرڈ اسٹیشن کے تین ٹرانسفارمر ٹرپ کر گئے تھے ۔ٹرانسفارمر ٹرپ ہونے سے دیگر 220کے وی گرڈ اسٹیشنز بھی متاثر ہوئے ۔ ترجمان این ٹی ڈی سی کے مطابق انجینئرز نے کم سے کم وقت میں بجلی کی سپلائی بحال کردی ۔ ترجمان این ٹی ڈی سی کے مطابق جینکوIIIکے زیر انتظام 220 کے وی پیراں غائب پاور پلانٹ یارڈ میں فنی خرابی بھی دور کی جارہی ہے ۔