پشاور ہوٹل دھماکے میں ٹل کے ایک ہی خاندان کے سات افراد کی شہادت عظیم سانحہ ہے،پیر حید ر علی شاہ

صوبائی حکومت کی طرف سے دھماکے پر خاموشی اور متاثرہ خاندان کی دلجوئی نہ کرنا قابل مذمت اقدام ہے،سابق رکن قومی اسمبلی

پیر مئی 17:48

ْھنگو (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 مئی2018ء) پشاور ہوٹل دھماکے میں ٹل کے ایک ہی خاندان کے سات افراد کی شہادت عظیم سانحہ ہے،صوبائی حکومت کی طرف سے دھماکے پر خاموشی اور متاثرہ خاندان کی دلجوئی نہ کرنا قابل مذمت اقدام ہے،ہنستے بستے گھرانے کے سات افراد لقمہ اجل بن گئے کوئی ٹس سے مس نہ ہوا،مرکزئی اور صوبائی حکومت لواحقین کی بھر پور مالی امداد کرے اور واقعہ کی غیر جانب دارانہ تحقیقات کر کے واقعہ کے اصل محرکات کو سامنے لایا جائے۔

ایسا سانحہ پنجاب میں ہوتا تو شہباز شریف اور تمام ادارے حرکت میں آ جاتے۔ان خیالات کا اظہار عوامی نیشنل پارٹی ضلع ھنگو کے صدر اور سابق ایم این اے پیر حیدر علی شاہ نے اخباری بیان میں کیا۔انہوں نے کہا کہ گیارہ مئی کو پشاور میں آفندی ہوٹل میں ٹہرے ہوئے ھنگو کے علاقہ ٹل کے ایک ہی خاندان کے سات افراد ایک پر اسرار دھماکے میں شہید ہو گئے یوں ایک پورا ہستا مسکراتا گھرانہ لقمہ اجل بن گیا خواتین سمیت سات افراد ایک ہی گھر کے شہید ہو گئے مگر لمحہ فکریہ ہے کہ اس قیامت صغراء پر صوبائی حکومت اور تمام ادارے خاموش ہیں اور کسی نے غم زدہ خاندان کی غم جوئی نہیں کی۔

(جاری ہے)

پیر حیدر علی شاہ نے کہا کہ ایسا دلخراش اور الم ناک حادثہ پنجاب میں ہوتا تو مرکزئی اور صوبائی حکمران اور تمام ریاستی ادارے ریلیف اور انکوائیری اور امداد کے لیے کمر کس لیتے مگر بد بختی سے خیبر پختون خواہ حکومت کے سر پر ضون تک نہیں رینگی۔انہوں نے کہا کہ ایسے واقعات پر حکومتی بے حسی انتہائی منفی اثرات معاشرے پر مرتب کر سکتی ہے اور عوام میں احساس محرومی پروان چڑھ سکتا ہے پیر حیدر علی شاہ نے کہا کہ اس حادثے سے ضلع ھنگو بالخصوص ٹل شہر سوگوار ہے انہوں نے مرکزئی اور صوبائی حکومت کے اس المناک حادثے پر مجرمانہ بے حسی کی مزمت کرتے ہوئے وزیر اعلی خیبر پختوں خواہ سے مطالبہ کیا ہے کہ متاثرہ خاندان کی بھر پور مالی امداد کی جائے ان کے زخموں پر مرحم رکھا جائے اور حادثے کی شفاف تحقیقات کر کے حقائق قوم کے سامنے رکھے جائیں۔

انہوں نے کہا کہ ایسا انسانیت سوز اوردلخراش واقعہ میں بے گناہ معصوم شہری لقمہ اجل بنے۔یہ واقعہ ناقابل فراموش اور المناک ہے جس سے تا حال ٹل کی فضا سوگوار ہے اور انسانیت کا تقاضا ہے کہ متاثرہ خاندان کی خبر گیری کی جائے۔