میزائل اور جنگی ساز و سامان کی بجائے اقتصادی ترقی زیادہ اہم ہے، احسن اقبال

ْ اقتصادی ترقی چوکے چھکوں کا نہیں ایک ٹیسٹ میچ ہے ،ہم نے دہشت گردی کے متاثرہ سے فاتح کا سفر شروع کر دیا ،ہر شہری کو امن اور ہم آہنگی کی فضاء دینا ہمارا فرض ہے،آج دنیا پاکستان کو خطر ناک ملک کی بجائے ابھرتی ہوئی اقتصادی طاقت قرار دے رہی ہے،ڈیجیٹل معیشت نیا پلیٹ فارم ہے،آج سائبر ٹیکنالوجی اور ڈیجیٹل معیشت کے حوالے ہم دنیا سے بہت بہتر ہیں،‘ ہم نے دہشت گردوں کی کمر توڑ دی ‘ پاکستان کامیابی کی داستان رقم کرنے کے لئے تخلیق ہوا‘ ہمیں اپنے مسائل کا مفتوح نہیں بلکہ فاتح ہونا ہے وفاقی وزیر داخلہ کا ایئر یونیورسٹی میں نیشنل سنٹر فار سائبر سیکیورٹی کی تقریب سے خطاب

پیر مئی 17:56

میزائل اور جنگی ساز و سامان کی بجائے اقتصادی ترقی زیادہ اہم ہے، احسن ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 مئی2018ء) وفاقی وزیر داخلہ پروفیسر احسن اقبال نے کہا ہے کہ میزائل اور جنگی ساز و سامان کی بجائے اقتصادی ترقی زیادہ اہم ہے، اقتصادی ترقی چوکے چھکوں کا نہیں ایک ٹیسٹ میچ ہے ،ہم نے دہشت گردی کے متاثرہ سے فاتح کا سفر شروع کر دیا ،ہر شہری کو امن اور ہم آہنگی کی فضاء دینا ہمارا فرض ہے،آج دنیا پاکستان کو خطر ناک ملک کی بجائے ابھرتی ہوئی اقتصادی طاقت قرار دے رہی ہے،ڈیجیٹل معیشت نیا پلیٹ فارم ہے،آج سائبر ٹیکنالوجی اور ڈیجیٹل معیشت کے حوالے ہم دنیا سے بہت بہتر ہیں،‘ آج ہم نے دہشت گردوں کی کمر توڑ دی ہے‘ پاکستان کامیابی کی داستان رقم کرنے کے لئے تخلیق ہوا‘ ہمیں اپنے مسائل کا مفتوح نہیں بلکہ فاتح ہونا ہے۔

وہ پیر کو یہاں ایئر یونیورسٹی میں نیشنل سنٹر فار سائبر سیکیورٹی کی تقریب سے خطاب کر رہے تھے۔

(جاری ہے)

وزیر داخلہ نے ائر یو نیورسٹی میں نیشنل سنٹر فار سائبر سیکیورٹی کا افتتاح کر دیا۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر داخلہ پروفیسر احسن اقبال نے کہا کہ سنٹر فار سائبر سیکیورٹی کے منصوبے کا افتتاح میرا خواب تھا ،6 مئی کو ایک بزدل نے مجھ پر بھی حملہ کیا،مارنے والے سے بچانے والا زیادہ طاقتور ہے،کچھ عناصر تشدد کے ذریعے ملک کو یر غمال بنانا چاہتے ہیں،2013میں ملک کی عبادتگاہیں،بازار اور عوامی مقامات سمیت کوئی جگہ دہشت گردوں ںسے محفوظ نہیں تھی،آج دہشت گردوں کی کمر توڑی جا چکی ہے،ہم نے دہشت گردی کے متاثرہ سے فاتح کا سفر شروع کر دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اقتصادی ترقی چوکے چھکوں کا نہیں ایک ٹیسٹ میچ ہے ،،پاکستان اقتصادی ترقی کی منازل طے کر رہا ہے لیکن ہم دنیا سے پیچھے ہیں،قوموں کو اقتصادی ترقی کی ضرورت ہے،میزائل اور جنگی ساز و سامان کی بجائے اقتصادی ترقی زیادہ اہم ہے،آج دنیا پاکستان کو خطر ناک ملک کی بجائے ابھرتی ہوئی اقتصادی طاقت قرار دے رہی ہے،پانچ سال قبل ہم اٹھارہ سے بیس گھنٹے بجلی کی لوڈ شیڈنگ کا شکار تھے،آج اٹھارہ سے بیس گھنٹے بجلی موجود رہتی ہے،بد امنی کے باعث پانچ سال قبل سرمایہ دار کراچی سے بیرون ملک منتقل ہو رہے تھے،آج لوگ کراچی میں ہی رہنا چاہتے ہیں۔

وزیر داخلہ پروفیسر احسن اقبال نے کہا کہ آج تبدیلی کی بڑی بات ہوتی ہے لیکن ہم دنیا کو پاکستان کا مثبت پہلو نہیں بتا رہے،ڈیجیٹل معیشت نیا پلیٹ فارم ہے،آج سائبر ٹیکنالوجی اور ڈیجیٹل معیشت کے حوالے ہم دنیا سے بہت بہتر ہیں،نسٹ میں آر ٹیفیشل انٹیلی جنس کا سنٹر قائم کیا جا چکا ہے،ائر یو نیورسٹی میں سنٹر فار سائبر سیکیورٹی قائم کیا جا رہا ہے ، نوجوانوں کو لیپ ٹاپ دیئے آج وہ پاکستان کو آئی ٹی کے شعبے میں طاقتور بنا رہے ہیں۔وزیر داخلہ پروفیسر احسن اقبال کے خطاب کے دوران ائر یو نیورسٹی میں بجلی بند ہو گئی،وزیر داخلہ نے اپنی تقریر میں بجلی کی پیداوار میں اضافے کا خصوصی تذکرہ کیا تھا، گزشتہ 68 سالوں میں اتنی بجلی پیدا نہیں ہوئی جتنی ہم نے 5 سالوں میں کی۔