بھارت، بندروںکا گائوں پر قبضہ،مکین یرغمال

خوف وہراس کی فضا کے باعث لوگ گھر بار چھوڑ کر فرار ہونے پر مجبور

پیر مئی 19:32

نوساری(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 مئی2018ء) بھارتی صوبے گجرات میں بندروں نے گائوں پر قبضہ کر کے مکینوں کو یرغمال بنا لیا، خوف وہراس کی فضا میں لوگ گھر بار چھوڑ کر فرار ہونے پر مجبور ہو گئے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق بندروں کی شرارتیں چھیڑ چھاڑ اور بدمعاشیاں عام سی بات ہیں مگر یہاں کے بندروں نے تو پورے گائوں پر ہی زور زبردستی قبضہ کر لیا ہے جس کی وجہ سے نوساری کے لوگوں میں زبردست خوف و ہراس پھیل گیا اور لوگ گھر بار چھوڑ کر فرار ہونے پر مجبور ہو گئے ہیں ۔

کہا جاتا ہے کہ ان بندروں نے گائوں کے لوگوں کا جینا دوبھر کر دیا تھا ۔ وہ ہر آتے جاتے شخص کا تعاقب کرکے اس پر حملہ کرتے ،اسکے ہاتھ میں موجود چیزیں بالخصوص کھانے پینے کی چیزوں پر ہاتھ صاف کر دیتے ہیں ۔بندروں کے حملوں سے کئی افراد جن میں عورتیں اور بچے شامل ہیں گزشتہ چند ماہ میں زخمی بھی ہوئے ۔

(جاری ہے)

اس حوالے سے کچھ لوگوں نے خفیہ کیمروں کی مدد سے جو تصویریں اتاری ہیں وہ وائرل ہو گئی ہیں ۔

ان میں بندروں کو لوگوں کا تعاقب کرتے اور لوگوں کو خوفزدہ ہو کر بھاگتے ہوئے دیکھا جا سکتا ۔ یہ بندر موٹر سائیکل سواروں کو بھی نہیں بخشتے اور جہاں کسی نے موٹر سائیکل کی رفتار ذرا بھی کم کی تو اسے دھکے دے کر گرا نا انکا مشغلہ بن گیا ہے جس کی وجہ سے کئی لوگ زخمی بھی ہوئے ۔ محکمہ جنگلات نے صورتحال کے پیش نظر پورے معاملے کی جانچ پڑتال شروع کر دی ہے اور ان بندروں کیلئے مختلف اسکیموں پر غور شروع کر دیا ہے ۔ ایک دودھ فروش کا کہنا ہے کہ اس پر ایک بندر نے کم از کم 7دفعہ حملہ کیا ہے جس سے وہ زخمی ہوا ۔ یہ بندر عورتوں کو بھی پریشان کرتے رہتے ہیں ۔ ایک عورت کو ایک بندر نے اس زور سے دھکہ دیا کہ وہ گر کر بیہوش ہو گئی ۔

متعلقہ عنوان :