وزارت داخلہ کا ضلعی انتظامیہ کی جانب سے ہائوسنگ سوسائٹیوں میں میگا کرپشن پر نوٹس

چیف کمشنر اسلام آباد سے رپورٹ طلب الیکشن سے قبل کرپٹ افسران کو فارغ کرکے کریڈٹ لینے کا فیصلہ

پیر مئی 20:46

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 مئی2018ء) وزارت داخلہ نے ضلعی انتظامیہ کی جانب سے ہائوسنگ سوسائٹیوں میں میگا کرپشن پر نوٹس لیتے ہوئے چیف کمشنر اسلام آباد سے رپورٹ طلب کرلی ہے۔ وزیر داخلہ نے الیکشن سے قبل کرپٹ افسران کو فارغ کرکے کریڈٹ لینے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ وزارت داخلہ ذرائع کے مطابق وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال نے ضلعی انتظامیہ کے کرپٹ افسران جو کہ ہائوسنگ سوسائٹیوں میں کروڑوں کی کرپشن سکینڈل میںملوث ہیں ان کی گردن مروڑنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

احسن اقبال کو بتایا گیا ہے کہ کرپٹ افسران سے متعلق جیسے نشاندہی کی جارہی ہے اور یہ عمل ایسے رہا تو پھر نگران حکومت کے پہلے ہفتے میں ان کو فارغ کردیا جائیگا۔ بہتر عمل ہوگا کہ انہیں موجودہ حکومت میں ہی فارغ یا انکے خلاف انکوائریاں کروانے کا حکم دیا جائے تاکہ کریڈٹ موجود رہے ۔

(جاری ہے)

لہذا وزارت داخلہ نے چیف کمشرن اسلام آباد آفتاب اکبر کو ہدایات میں کہا کہ کرپٹ عناصر کی فوری طور پر نشاندہی کی جائے تاکہ انکی سرکوبی کیلئے ضروری اقدامات اٹھائے جاسکیں۔

ضلعی انتظامیہ ذرائع کے مطابق چیف کمشنر نے کرپٹ افسران سے متعلق ایک جامع رپورٹ بنانے کا ٹاسک اپنے ہونہار افسران کے سپرد کردیا ہے۔ معلومات کے مطابق پانچ اسسٹنٹ کمشنر سے متعلق ذرائع کا کہنا ہے کہ وہ کنگال آئے تھے اور آج کروڑوں کے بنگلوں اور لینڈ کروزرپر سوار ہوئے پھرتے ہیں ۔ خفیہ اداروں نے اپنے افسران کی بھی نشاندہی میڈیا ۔۔ پر کر رکھی ہے اور 76صفحات پر مشتمل رپورٹ بھی باقاعدہ جمع کروائی گئی ہے۔