سنجھورو کا غریب کسان تین سال کے بعد بھی انصاف سے محروم

والد بیماری کے سبب بستر مرگ پر ہیں ، بااثر زمیندار کیس سے دستبردار ہونے کے لئے دھمکیاں دے رہا ہے، منظور علی لغاری کی پریس کانفرنس

پیر مئی 22:20

سنجھورو (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 مئی2018ء) سنجھورو کا غریب کسان تین سال کے بعد بھی انصاف سے محروم ہے۔ والد بیماری کے سبب بستر مرگ پر ہیں ، بااثر زمیندار کیس سے دستبردار ہونے کے لئے دھمکیاں دے رہا ہے۔ ان خیالات کا اظہار تعلقہ سنجھورو کے منظور علی لغاری، شھزورلغاری نے پریس کلب سانگھڑ میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہی اور کہا کہ 2015 کوتین سال قبل میرے والد علی غلام لغاری زمیندار ممتاز ،اعجاز جاوید جونیجو کے پاس کاشتکاری کرتے تھے محنت مشقت مزدوری کے 26 لاکھ روپے سے زائد رقم تھی جس کا حساب کتاب زمیندار نے خود کرکے پرچہ ہمارے حوالے کیا رقم دینے نے انکار کر دیا الٹا سنجھورو تھانے جھوٹا کیس داخل کیا اور گھروں پر فائرنگ اور آگ لگادی۔

حملے کئے جس کی بنا پر ھمارا لاکھوں روپے کا نقصان ہوا۔

(جاری ہے)

گائوں سے بیدخل کردیا۔ اس وقت سندھ ھائی کورٹ میں انصاف کے منتظر ہیں۔ میرا والد غلام علی لغاری بیماری کی حالت بستر پر ھے جنھوں نے کسان ایکٹ کے تحت حساب طلب کیا تھا جس پر زمیندار انصاف دینے کی بجائے ھمیں گاں سے بیدخل کردیا۔ زمیندار کیس سے دستبردار ھونے کے لئے دھمکیاں دی جارھی ھے انکی مبینہ طورپر پیپلز پارٹی کے رکن قومی اسمبلی روشن الدین جونیجو، خادم حسین رند، دیگر کر رھے ھیں موجودہ ایس ایس پی سانگھڑ کو بھی تمام صورت حال سے آگاہی دی انھوں اعلی حکام سے مطالبہ کیا ہے گھروں سے لوٹا گیا سامان واپس کرایا جائے تین سالوں سے انصاف لئے دربدری کا شکار ھیں ھمارے ساتھ انصاف کیا جائے ھمیں تحفظ فراہم کیا جائے۔