رمضان المبارک میں ضلعی انتظامیہ منافع خوروں کے آگے بے بس ہوگئی، خورونوش کی قیمتوں میں من مانا اضافہ

پیر مئی 22:20

ٹنڈوالہ یار (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 مئی2018ء) رمضان المبارک کے بابرکت مہینے میں ضلعی انتظامیہ منافع خوروں کے آگے بے بس ہوگئی۔ منافع خوروں نے فروٹ سبزی ودیگر خرد ونوش ایشیاء کی قیمتوں میں من مانے اضافے کردیئے۔

(جاری ہے)

لوگوں کا کہنا ہے کہ گذشتہ دنوں رمضان المبارک کے حوالے سے ہونے والی افسران کی میٹنگ میں بڑے بڑے دعوے کئے گئے تھے کہ رمضان المبارک میں عوام کو سستے داموں سامان معیا کرانے کے لئے اقدامات کئے جائیں گے اور منافع خوروں کے خلاف سخت کاروائی کی جائیں گی مگر ٹنڈوالہ یار اس کے برعکس کاروائیاں کی جارہی ہیں لوگوں کا کہنا ہے کہ ضلعی افسران اپنے ایئر کنڈیشن روم سے چند منٹوں کے لئے مارکیٹوں میں نکلتے ہیں اور وہ کاروائی کرتے ہوئے بڑے بڑے منافع خوروں کے بجائے غریب ٹھیلے والوں کے خلاف کاروائی کرتے ہوئے نظر آتے ہیں جبکہ فروٹ ، سبزیو ں ، اور دیگر خرد ونوش ایشیاء کے بڑے منافع خور بیو پاریوں کے خلاف کاروائی نہیں کی جاتی عوام نے بتایا کہ مارکیٹ کمیٹی کی جانب سے معیا کی جانے والی ریٹ لسٹ کو بھی مارکیٹ کمیٹی ٹھیلے والے اور دکانداروں کو مہنگے دام فروخت کرتے ہیں جبکہ عوام نے بتایا کہ سب سے پہلے فروٹ منڈی کے آڑتیوں کے خلاف کاروائی کی جائے کہ وہ ٹھیلے والوں کو مہنگے داموں فروٹ کیوں فروخت کرتے ہیں انہوں نے بتایا کہ رمضان المبارک سے 2روز قبل کیلا 60درجن ، چیکوں 60روپے کلو، تربوز 20کلو، خربوزہ 20روپے کلو، کھجور 100روپے کلو ، میں فروخت کیا جاتا تھا مگر رمضان المبارک شروع ہوتے ہی کیلا 80روپے درجن ، چیکو ں 100کلو ، تربوز 40روپے کلو ، خربوزہ 45روپے کلو ، کھجور 150سے 200روپے کلو ، سے بھی زیادہ کا فروخت کیا جارہا ہے جبکہ چھوٹے کا گوشت 800روپے کلو ، بڑے کا گوشت 400روپے کلو ،تک فروخت کیا جارہا ہے عوام نے بتایا ہے کہ ضلعی انتظامیہ کہ بلند و بانگ دعوہ کے باوجود ٹنڈوالہ یار میں رمضان المبارک آرڈینیس کی کھلی خلاف ورزی کی جارہی ہے روزے کے اوقات میں جگہ جگہ ہوٹلیں ، پان کی کیبن ، کھانے پینے کی دکانیں ، کھلے عام کھلی ہوئی ہے جہاں بے روزیدار آسانی سے کھانے پینے کی ایشیاء خرید کر کھارہے ہیں جبکہ ہوٹلوں میں بے روزیداروں کا رش لگا ہوا ہے اور وہاں پر پولیس اہلکار بھی اپنی ڈیوٹی دینے کے بجائے ان کی سرپرستی کرتے ہوئے نظر آتے ہیں جبکہ ٹنڈوالہ یار میں غیر معیاری مشروبات کے اسٹال بھی لگے ہوئے ہیں جہاں کھلے عام غیر معیاری مشروبات فروخت کئے جارہے ہیں لوگوں کا کہنا ہے کہ ضلعی و تعلقہ انتظامیہ رمضان المبارک کے اس بابرکت مہینے میں اگر اپنی ڈیوٹی سر طریقے انجام نہیں دے سکتے تو وہ اپنی نوکریاں چھوڑ دیں یا چھوٹیوں پر چلے جائیں تاکہ ان کی جگہ کوئی ایماندار آفسر تعینات ہوسکے جو سختی سے ان منافع خور وں کے خلاف سخت کاروائی کر سکے اور روزیدار سستا سامان خرید سکیں ۔