انتخاب سے پہلے احتساب کے نام پر الیکشن تاخیر کا شکار نہیں ہونا چایئے،صاحبزادہ شاہ محمد اویس نورانی

اسلام آباد میں اسلام کا جھنڈا لہرانے کا وقت قریب ہے، اسلام پسند عوام کی حمایت سے انتخابی معرکہ جیتیں گے،مرکزی ترجما ن ایم ایم اے

پیر مئی 22:55

ْ لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 مئی2018ء) جمعیت علماء پاکستان کے سیکرٹری جنرل اور متحدہ مجلس عمل کے مرکزی ترجمان صاحبزادہ شاہ محمد اویس نورانی نے کہا ہے کہ انتخاب سے پہلے احتساب کے نام پر الیکشن تاخیر کا شکار نہیں ہونا چایئے۔ اسلام آباد میں اسلام کا جھنڈا لہرانے کا وقت قریب ہے۔ کتاب کا نشان کامیابی کا نشان ہے۔ اسلام پسند عوام کی حمایت سے انتخابی معرکہ جیتیں گے۔

ایم ایم اے نے فرقہ واریت کو دفن کر دیا ہے۔ ہم پاکستان کو شام اور عراق نہیں بننے دیں گے۔ ان خیالات کا اظہار انھوں نے جے یو پی کے عہدیداران و کارکنان سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ صاحبزادہ شاہ اویس نورانی نے مزید کہا کہ مسلم ممالک میں بہنے والے خون کے پیچھے امریکی وردی ہے۔ اسلامی دنیا بیرونی مداخلتوں کی وجہ سے لہولہان ہے۔

(جاری ہے)

امریکہ اور بھارت مل کر پاکستان کے خلاف سازشیں کر رہے ہیں۔

اس وقت ملک کو انتشار نہیں اتحاد کی ضرورت ہے۔ الزام تراشی کی سیاست ریاست کے لئے زہر قاتل ہے۔ ممبئی حملوں کا ماسٹر مائنڈ خود بھارت ہے۔ بھارت نے ممبئی حملوں کی تحقیقات کے لئے پاکستان کے ساتھ تعاون نہیں کیا۔ شاہ اویس نورانی نے کہا کہ سیاست میں انتہا پسندانہ رحجانات قومی المیہ ہے۔ سیاسی انتہا پسندی کا عفریت بے قابو ہو رہا ہے۔ اعتدال پسندی کا فقدان اور انتہا پسندی کا فروغ معاشرے کے لئے زہر قاتل ہے۔

سب کو اخلاقی دائرے میں رہنا ہو گا۔ صاحبزادہ شاہ اویس نورانی نے کہا کہ انتخابات میں تاخیر کسی صورت نہیں ہونی چایئے۔ الیکشن کمیشن ضابطہ اخلاق کی پابندی یقینی بنائے۔ الیکشن میں انتخابی اخراجات کی مقرر کی گئی حدود کی پابندی کروانا الیکشن کمیشن کی ذمہ داری ہے۔ نوٹوں سے ووٹ خریدنے کی روایت ختم کی جائے۔ سیاست میں پیسے کا عمل دخل بند نہ ہوا تو جاگیر دار اور سرمایہ دار ہی ملک پر مسلط رہیںگے۔