مسلم لیگ ن میں دوبارہ شمولیت اختیار کرنے والے جاوید ہاشمی پھر سے متنازعہ ہو گئے

جاوید ہاشمی کی پارٹی میں شمولیت پر تنازعہ کھڑا، کارکنان نے پارٹی چھوڑنے کی دھمکی دے دی

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین منگل مئی 11:23

مسلم لیگ ن میں دوبارہ شمولیت اختیار کرنے والے جاوید ہاشمی پھر سے متنازعہ ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 22 مئی 2018ء) : سینئیر سیاستدان جاوید ہاشمی کی مسلم لیگ ن میں دوبارہ شمولیت پر پارٹی میں کئی تنازعات کھڑے ہو گئے ہیں۔ قومی اخبار میں شائع ایک رپورٹ کے مطابق جاوید ہاشمی کے دوبارہ پارٹی میں شمولیت اختیار کرنے سے سینئیر سیاستدان پارٹی کے لیے ملتان میں پریشانی کا باعث بن رہے ہیں، ضلع ملتان سے تعلق رکھنے والے اکثر پارٹی رہنما جاوید ہاشمی کی واپسی پر مایوسی کا شکار ہیں، ٹکٹوں کی تقسیم اور اعلیٰ قیادت کی جانب سے جاوید ہاشمی کو فوقیت دئیے جانے پر کئی رہنماؤں اور کارکنان نے پارٹی سے علیحدگی اور آزاد حیثیت میں الیکشن لڑنے کا عندیہ دے دیا ہے ۔

اور اس کا خمیازہ پارٹی کو جنوبی پنجاب میں سابقہ انتخابات میں جیتی ہوئی سیٹیں ہار کر بھگتنا پڑے گا، ذرائع کے مطابق مقامی قیادت کا خیال ہے کہ جاوید ہاشمی نے حد متنازعہ ہو چکے ہیں اور ان کے اداروں کے حوالے سے دئے جانے والے بیانات سے بھی ملک سمیت جنوبی پنجاب میں پارٹی کی مقبولیت پر شدید اثر پڑ رہا ہے۔

(جاری ہے)

ایسے موقع پر جبکہ انتخابات قریب ہیں، انہیں دوبارہ پارٹی میں لیا جانا قطعی طور پر دانشمندانہ فیصلہ نہیں ہے جس کا خمیازہ پارٹی کو جنوبی پنجاب سے بھگتنا پڑے گا۔

ذرائع نے یہ بھی بتایا کہ بہت سے لیڈروں نے اس پر احتجاج کا فیصلہ بھی کیا ہے اوران رہنماؤں میں شیخ طارق رشید بھی شامل ہیں جو ملتان شہر کے جنرل سیکرٹری ہیں اور حلقہ این اے 155 سے ٹکٹ ہولڈر بھی رہ چکے ہیں، شامل ہیں۔ اس کے علاوہ ملک انور پی پی 215، اختر عالم قریشی ، زاہد بشیر ، شیخ ندیم اکبر جو کہ ن لیگ کے ٹکٹ پر یو سی چئیرمین ہیں، ان کے علاوہ یوتھ ونگ کے ضلعی صدر منظور کھوسہ اور طارق امیر عباسی سمیت درجنوں عہدیدار شامل ہیں۔