زراعت کی ترقی کیلئے نجی شعبہ لبیارٹریاں قائم کرے ، زرعی ماہرین

منگل مئی 16:47

لاہور۔22 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 مئی2018ء) زرعی ماہرین نے کہا ہے کہ زراعت کی ترقی کیلئے نجی شعبہ کا کردار انتہائی اہمیت کا حامل ہے لیکن اس شعبہ کی جانب سے ابھی تک اپنا کردار ادا نہیں کرسکا ہے ، نجی شعبہ نے ایک بھی لیب ابھی تک قائم نہیں کی ، محکمہ زراعت کپاس و دیگر فصلوں کو دشمن کیڑوں سے بچانے کیلئے ایسے دوست کیڑے تیار کرتا ہے جو زہر سے بھی محفوظ رہیں گے، زرعی ماین نے مزید کہا کہ یہ امر خوش آئند ہے پنجاب بھر میں محکمہ زراعت کی 11لیبارٹریاں دن رات یہ کیڑے بنانے میں مصروف ہیں، ان دوست کیڑوں کو بنانے کیلئے عملہ کو خصوصی تربیت دی گئی ہے جبکہ یہ کیڑوں کو بنانے کے بعد کھیتوں میں چھوڑنے سے ان کی زندگی کا تحفظ بھی یقینی بنایا جاتا ہے، محکمہ زراعت نے کپاس کو مختلف قسم کے کیڑوں کے حملہ سے بچانے کیلئے کرائی سوپا نامی کیڑے کو انتہائی مفید قرار دیا ہے، یہ کیڑا 329 سفید مکھی کے بچوں، 288 سبز تیلے اور 100 سست تیلے کو کھا جاتا ہے، محکمہ زراعت نے اس کیڑے کی افزائش نسل کا کام تیز کر دیا ہے ان لیبارٹریوں کو تمام ضروری سہولتیں فراہم کرنے کیلئے سیکرٹری زراعت محمد محمود نے خصوصی فنڈز فراہم کئے ہیں ، ان کیڑوں کو بنانے کے علاوہ کپاس کے حوالے سے آف سیزن مینجمنٹ فارمولہ پر بھی عمل جاری ہے اور دوسری فصلوں میں چھپے کپاس کے دشمن کیڑوں کو تلف کرنے کا کام بھی تیزی سے جاری ہے ، محکمہ زراعت پنجاب کی یہ لیبارٹریاں آئی ایس او سرٹیفکشن کی حامل ہیں اور ان میں دستیاب سہولیات کسی بھی انٹرنیشنل لیبارٹری سے کم نہیں ہے۔

متعلقہ عنوان :