شفاف ،آزادانہ اور منصفانہ انتخابات کے انعقاد کے لیے تیاریاں شروع کر دی گئی ہیں ،ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افسر حافظ آباد

الیکشن کمیشن کی ہدایات ،آئین کی رُو سے تمام متعلقہ ادارے انتخابات کے بہترین انعقاد کے سلسلہ میں اپنی ذمہ داریاں ادا کرنے کے پابند ہیں، عزیز اللہ کلو

منگل مئی 16:50

حافظ آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 مئی2018ء) ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج /ڈسٹر کٹ ریٹرننگ آفیسر حافظ آباد عزیز اللہ کلو نے کہا ہے کہ شفاف ،آزادانہ اور منصفانہ انتخابات کے انعقاد کے لیے تیاریاں شروع کر دی گئی ہیں اور الیکشن کمیشن کی ہدایات اور آئین کی رُو سے تمام متعلقہ ادارے انتخابات کے بہترین انعقاد کے سلسلہ میں اپنی ذمہ داریاں ادا کرنے کے پابند ہیں۔

انہوں نے واضح کیا کہ الیکشن کمیشن کی ہدایات پر عمل درآمد کرنے میں تساہل اور عدم دلچسپی کسی بھی صورت برداشت نہیں کی جائیگی اور بطور ڈسٹرکٹ ریٹرننگ آفیسر وہ شفاف انتخابات کے انعقاد میں خلل ڈالنے والوں کے خلاف بلا رو رعایت فوری ایکشن لیکر قانون اور آئین کی بالا دستی کو ہر صورت یقینی بنائیں گے۔انہوں نے کہا کہ متعلقہ محکموں کا فرض ہے کہ وہ الیکشن کمیشن کی ہدایات کی روشنی میں اپنی ذمہ داریاں فرض سمجھ کر ادا کریںاور ایک ٹیم بنکر الیکشن کمیشن اور ریٹرننگ افسران کی بھر پور معاونت کریں تاکہ اس اہم قومی فریضہ کی بطریق احسن ادائیگی ممکن ہو سکے۔

(جاری ہے)

انہوں نے ان خیالات کا اظہار ریٹرننگ افسر این اے 87،ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج عابد علی،ریٹرننگ آفیسر پی پی 69سینئر سول جج (ایڈمن) عامر شہزاد ،ریٹرننگ آفیسر پی پی 70سینئر سول جج خرم شہزاد اور ریٹرننگ آفیسر پی پی 71سول جج محمد وسیم انجم اور مختلف سرکاری محکموں کے افسران کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر (جنرل) اعجاز بھٹہ ،ڈی ایس پی صدر توصیف احمد اور ڈسٹرکٹ الیکشن کمشنر محمد سلیم بھی اجلاس میں شریک ہوئے۔

ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج نے کہا کہ شفاف انتخابات کے لیے سیکورٹی پلان کے مطابق اقدامات ہر صورت یقینی بنانا متعلقہ محکموں کی ذمہ داری ہوگی اور کسی کو بھی انتخابی عمل کے کسی بھی مرحلہ پر اثر انداز نہیں ہونے دیا جائیگا۔انہوں نے بتایا کہ 28مئی تک پولنگ اسکیم الیکشن کمیشن کو بھجوا دی جائیگی جہاں سے منظوری کے بعد پولنگ اسٹیشن نوٹیفائی کر دیئے جائیں گے۔

سینئر سول جج ایڈمن عامر شہزاد نے اجلاس کے شرکاء کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ بنوں کے بعد این اے 87حافظ آباد ملک بھر میں قومی اسمبلی کا دوسرا سب سے بڑا حلقہ ہوگا جہاں پر شفاف انتخابات کے لیے غیر معمولی اقدامات ناگزیر ہیں۔انہوں نے بتایا کہ اس حلقہ میں کم و پیش 591پولنگ اسٹیشن ہونگے جن میں سے 90پولنگ اسٹیشن پولیس رپورٹ کے مطابق حساس ترین "A"،کیٹگری ،185حساس ''B"کیٹگری جبکہ 316پولنگ اسٹیشن نارمل کیٹگری کے قرار دئے گئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ سرکاری عمارات میں بنائے جانے والے ان پولنگ اسٹیشنوں کے انفراسٹرکچر،،بجلی ،،پانی اور دیگر بنیادی سہولیات کی دستیابی کے حوا لہ سے متعلقہ ڈپارٹمنٹ اگلے دودنو ں کے اندر رپورٹ دینے کا پابند ہوگا۔اجلاس میں محکموں کو انکی ذمہ داریوں سے آگاہ کرتے ہوئے اس توقع کا اظہا ر کیا گیا کہ اہم قومی ٹاسک کی ادائیگی کے لیے تمام ممکنہ وسائل اور اقدامات بروئے کار لائے جائیں گے۔