مکہ مکرمہ،عبادات اور عمرہ ادائیگی کی غرض سے تمام ہوٹل بک

ایک لاکھ 62ہزار کمروں میں سے ایک لاکھ55ہزار پیشگی ادائیگی پر بک ہو چکے

منگل مئی 21:26

مکہ مکرمہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 مئی2018ء) مقدس مہینے رمضان کے آخری عشرے میں عبادت کی غرض سے مکہ مکرمہ کے تمام ہوٹل سو فیصد بک ہو گئے،،مکہ مکرمہ میں ایک لاکھ 62ہزار کمروں میں سے ایک لاکھ55ہزار پیشگی ادائیگی پر بک ہو چکے ہیں،کمروں کے نرخ میں بھی خاطر خواہ اضافہ ہوا ہے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابقمکہ مکرمہ میں مسجد الحرام کے ارد گرد کے وسطی علاقے میں واقع تمام ہوٹل رمضان المبارک کے آخری عشرے کے لیے ابھی سے بک ہوگئے ہیں ۔

ہوٹل کی صنعت سے وابستہ ذرائع نے بتایا ہے کہ مکہ مکرمہ کے اس علاقے میں واقع ہوٹلوں کے 162000 سے زیادہ کمرے ہیں، ان میں سے 155000 کمرے رقم کی پیشگی ادائی پر بک ہوچکے ہیں ۔وسطی علاقیمیں واقع ایک ہوٹل ڈائریکٹر مارکیٹنگ رضا شیلابی نے بتایا ہے کہ ان کے ہوٹل کے کل 810 کمرے ہیں اور وہ تمام کے تما م عازمین عمرہ نے بک کرالیے ہیں۔

(جاری ہے)

انھوں نے بتایا کہ رمضان کے پہلے عشرے کے دوران میں ایک کمرے کا کرایہ 1950 سعودی ریال سے 2500 سعودی ریال تک ہے اور اس میں افطار کا کھانا بھی شامل ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ آخری عشرے کے لیے دو کمروں کے نرخ میں بہت زیادہ اضافہ ہوچکا ہے اور یہ 28 ہزار سعودی ریال تک پہنچ گیا ہے۔اس میں بھی افطار کا کھانا شامل ہے۔ان کے بہ قول: رمضان سے تین ماہ قبل ہی کمرے اور سوئٹس بک ہونا شروع ہوگئے تھے۔ہم سعودی عرب اور بیرونی ممالک سے اس ماہِ مقدس کے آخری عشرے کے دوران میں بڑی تعداد میں کاروباری شخصیات کی عمرے کی ادائی کے لیے آمد کی توقع کررہے ہیں ۔

ایک اور ہوٹل کے مارکیٹنگ کے عملہ کے رکن عبداللہ الزہرانی نے بتایا ہے کہ اس وقت ان کے ہوٹل کے 98 فی صد کمروں میں زائرین ِعمرہ ٹھہرے ہوئے ہیں۔گذشتہ سال رمضان المبارک میں ان ہی ایام میں 90 فی صد کے لگ بھگ کمروں میں لوگ قیام پذیر تھے۔ان کا بھی کہنا تھا کہ رمضان کے آخری عشرے کے لیے ان کے ہوٹل کے 100 فی صد کمرے بک ہوچکے ہیں اور ایک کمرا 25 سے 42 ہزار سعودی ریال میں بک ہوا ہے۔واضح رہے کہ مکہ مکرمہ میں 947 فرنشڈ اپارٹمنٹس اور ہوٹل ہیں اور ان کے کل 162493 کمرے ہیں جہاں زائرین و عازمین حج اور عمرہ مناسک کی ادائی کے دوران میں قیام کرتے ہیں ۔