کے ایم یو پشاورنے بیلجیم کی کمپنی کے اشتر اک سے انسا نی اعضاء سے متعلق جدید طر یقہ تد ریس مکسڈ رئیلٹی منصو بے کا آغاز کردیا

خیبر گر لز میڈیکل کا لج میں تجر با تی بنیا دوں پر منصوبہ شروع کیا گیا جسے بعد میں تما م صوبائی میڈیکل کا لجز تک تو سیع دی جا ئیگی

منگل مئی 22:03

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 مئی2018ء) خیبرمیڈیکل یونیورسٹی(کے ایم یو) پشاو رنے بیلجیم کی کمپنی ماکروپس ایس پی آر ایل(MCORPUS-SPRL )کے اشتر اک سے انسا نی جسم کے مختلف اعضاء سے متعلق جدید طر یقہ تد ریس مکسڈ رئیلٹی کے عنوان سے منصو بے کا آغا ز کر دیاگیا ، یہ منصو بہ ابتدا ئی طور پر نارتھ ویسٹ سکول آف میڈیسن اور خیبر گر لز میڈیکل کا لج میں تجر با تی بنیا دوں پر شروع کیا گیا ہے جسے بعد ازاں صو بے کا تما م میڈیکل کا لجز تک تو سیع دی جا ء گی۔

اس منصو بے کا افتتا ح گزشتہ روز یو نیو رسٹی کے وائس چا نسلر پروفیسر ڈاکٹر ارشد جا وید نے نا رتھ ویسٹ سکو ل آف میڈیسن اور خیبر گرلز میڈیکل کا لج میں کیا جبکہ اس مو قع پر یو نیو رسٹی کے پرووائس چا نسلر پروفیسر ڈاکٹر جو اد احمد، رجسٹرار پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم گنڈاپور، نا رتھ ویسٹ سکو ل آف میڈیسن کے پر نسپل پروفیسر ڈاکٹر اعجاز خٹک، کے جی ایم سی کے پر نسپل پروفیسر ڈاکٹر نور وزیر کے علاوہ پراجیکٹ ڈائر یکٹر ڈاکٹر آصف علی بھی مو جو د تھے۔

(جاری ہے)

تفصیلات کے مطا بق یہ منصو بہ خیبرمیڈیکل یونیورسٹی انسٹی ٹیوٹ آف بیسک میڈیکل سائنسز کے اسسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹر محمد آصف علی کی زیر نگرانی شروع کیا گیا ہے جبکہ اس منصو بے میں انکے دیگر شریک کا رڈاکٹر ظل ھماء، ڈاکٹر عنا یت شا ہ، ڈاکٹر نجمہ بصیر او ر ڈاکٹر یا سر یو سفزئی ہیں۔ اس منصو بے کے تحت میڈیکل کا لجز کے طلبا ء و طالبا ت کو انسا نی جسم کے مختلف اعضا ء کے متعلق تھری ڈی کے جدید سسٹم کے حا مل ہولو گرام لینسز کے ذریعے طبی تعلیم دی جائے گی۔

واضح رہے کہ کے ایم یو دنیا کی دوسری طبی جا معہ ہے جہا ں طبی تعلیم کی تدریس کی یہ جدید تر ین تھری ڈی مکسڈ رئیلٹی ٹیکنا لو جی استعما ل کی جا ئے گی جس کا فیکلٹی اور طلبا ء و طا لبا ت نے پر جو ش خیر مقدم کیا ہے۔ دریں اثنا ء کے ایم یو کے وائس چا نسلر پروفیسر ڈاکٹر ارشد جا ویدنے اس منصو بے کی افتتا حی تقر یب سے خطا ب کر تے ہو ئے کہا ہے کہ اس منصو بے کا صو بے کے دو میڈیکل کا لجو ںمیں تجر با تی بنیا دوں پر آغا ز نہ صر ف بین الاقوامی اداروں کا کے ایم یو پر اعتما د کا مظہر ہے بلکہ یہ اس بات کا ثبوت ہے کہ کے ایم یو صو بے میں طبی تعلیم میں جدت اور اصلاحا ت کے ایک جا مع ایجنڈے پر بھی عمل پیرا ہے ۔

انھو ں نے کہا کہ اس جدید ٹیکنا لو جی کے استعمال سے طلبا ء و طا لبا ت کو جدید انداز میں انسانی جسم کے مختلف اعضا ء اور انکے افعال کے با رے میں درکا ر معلو ما ت فراہم کی جا سکیں گی جس سے طلبا ء و طالبا ت کے سا تھ سا تھ فیکلٹی کو بھی فا ئد ہ ہو گا۔ انھو ں نے کہا کہ ان دو کالجز میں کا میا ب تجر با ت کے بعد جلدہی صو بے کے دیگر میڈیکل کا لجز میں بھی اس منصو بے کا آغاز کیا جا ئے گا۔

متعلقہ عنوان :