نارووال، محکمہ ایجوکیشن میں بھرتی 16گریڈ کے اے ای اووز کا اپنے مطالبات کے حق میں مظاہرہ

گزشتہ ایک سال سے 25ہزار روپیہ سکولز کی انسپکیشن الائونس اور ٹی اے ڈی اے نہیں دیا جا رہا ، اعلی حکام نوٹس لیں، مظاہرین

منگل مئی 22:32

نارووال(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 مئی2018ء) ضلع بھر کے 81کے قریب مرد اور خواتین محکمہ ایجوکیشن میں بھرتی 16گریڈ کے اے ای اووزنے اپنے مطالبات کے حق میں چیف ایگزیکٹیوآفیسر ڈسٹرکٹ ایجو کیشن نارووال ڈاکٹر شہزاد احمد اعوان کے آفس کے سامنے بھر پور احتجاجی مظاہرہ کیا اور دھرنا بھی دیا اس موقع پر اے ای اووز ایسو سی ایشن نارووال کے ذمہ داران آصف علی،محمد جمشید،قدیر احمد،محمد فیصل ،ذیشان، عبدالقدیر خان،،چوہدری مصدق و دیگر نے احتجاج کرتے ہوئے میڈیا کے نمائندہ کو بتایا کہ گزشتہ ایک سال سے 25ہزار روپیہ سکولز کی انسپکیشن الائونس نہیں دیا جا رہا اور نہ ہی ٹی اے ڈی اے دیا جا رہا جبکہ ہمیں جب چاہے میٹنگ پر بھی بلا لیتے ہیں،تمام اخراجات ہم اپنی پاکٹ سے برداشت کر رہے ہیںاوراب نوبت فاقوں تک آپہنچی ہے ۔

(جاری ہے)

انہوں نے مطالبہ کیا ہے کہ انسپکشن الائونس کو فوری بحال کیا جائے اور تنخواہوں کے ساتھ ایڈجسٹ کیا جائے اس کے ساتھ ہمیں ٹی اے ڈی اے بھی دیا جائے ورنہ احتجاج کا دائرہ کار وسیع کیا جائے گا۔اسی سلسلہ میںجب ڈپٹی کمشنر نارووال علی عنان قمر سے رابطہ کیا تو انہوں نے فوری ایکشن لیتے ہوئے چیف ایگزیکٹیو ایجوکیشن شہزاد اعوان کو تمام معاملات حل کرنے کے احکامات صادر کئے ،جب چیف ایگزیکٹیو آفیسر ایجو کیشن شہزاد اعوان اے ای اووز کے دھرنا احتجاج تک پہنچے توپہلے انہوں نے زبردستی اٹھانے کی کوشش کی اور میڈیا کے نمائندگان کو بتایا کہ الائونس اب ان کی پرکارکردگی کے حساب سے ملے گا تاہم اے ای اووز اور چیف ایگزیکٹیو شہزاد اعوان کے درمیان مذاکرات کامیاب ہونے پر احتجاج ختم کر دیا گیا۔