بھارت میں آلودگی پھیلانے والی فیکٹری کیخلاف احتجاج، پولیس فائرنگ سے 9 شہری ہلاک ،ْتیس زخمی

سرکار فیکٹری پلانٹ کی توسیع کیخلاف ہے ،ْ توسیعی منصوبے کو روکنے کے لیے تمام قانونی راستو ں کو اختیار کیا جارہا ہے ،ْ وزیر فشریز

منگل مئی 23:48

چنئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 مئی2018ء) بھارت ریاست تامل ناڈو میں تانبا پگھلانے والی غیر ملکی فیکٹری کی توسیع کے خلاف احتجاج کرنے والوں پر پولیس کی اندھا دھند فائرنگ سے 9 افراد ہلاک ہوگئے۔۔بھارتی میڈیا کے مطابق تامل ناڈو کے جنوبی ضلع میں برطانوی کمپنی ’ویدانتا‘ کے مقامی کارخانے ’اسٹرلائٹ کاپر‘ کی توسیع کے خلاف 100 روز سے سراپا احتجاج افرادکو منتشر کرنے کیلئے پولیس نے طاقت کا وحشیانہ استعمال کرتے ہوئے گولیاں برسادیں۔

پولیس نے مظاہرین پر براہ راست گولیاں چلائیں اور طاقت کے زور پر منتشر کرنے کیلئے لاٹھی چارج بھی کیا،،پولیس کی فائرنگ سے اب تک 9 ہلاکتوں کی تصدیق کی گئی ہے ،ْ30 سے زائد زخمی ہیں۔ذرائع نے بتایا کہ ہزاروں افراد فیکٹری کے توسیعی منصوبے کے خلاف احتجاج میں شریک تھے۔

(جاری ہے)

مظاہرین نے بتایا کہ فیکٹری آلودگی پھیلا رہی ہے اور ماحول کو خراب کررہی ہے جس کے نتیجے میں ان کا پانی بھی زہریلا ہورہا ہے۔

ریاستی حکومت کی جانب سے جاری پریس ریلیز میں بتایا گیا کہ مظاہرین کی تعداد 20 ہزار سے زائد تھی، مظاہرین نے پلانٹ کیخلاف ریلی نکالی اور کلیکٹرآفس کی طرف مارچ کیا تو پولیس نے آگے بڑھنے سے روکنے کے لیے ان کے خلاف کارروائی کی۔تامل ناڈو کے وزیر فشریز ڈی جایا کمار نے صحافیوں کو بتایا کہ سرکار فیکٹری پلانٹ کی توسیع کیخلاف ہے اور اس توسیعی منصوبے کو روکنے کے لیے تمام قانونی راستو ں کو اختیار کیا جارہا ہے۔