گوارے کو پھلی دار فصل ہونے کے باعث زیادہ کھاد کی ضرورت نہیں ہوتی، محکمہ زراعت

بدھ مئی 13:23

فیصل آباد۔23 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 مئی2018ء) گوارے کو پھلی دار فصل ہونے کے باعث زیادہ کھاد کی ضرورت نہیں ہوتی تاہم جون جولائی میں بوقت کاشت ایک بوری ڈی اے پی اور پھول بنتے وقت آدھی بوری یوریا فی ایکڑ ڈالنے سے شاندار پیداوار حاصل کی جاسکتی ہے۔

(جاری ہے)

محکمہ زراعت فیصل آباد کے ترجمان نے بتایا کہ چارے کیلئے گوارے کی فصل جون جولائی میں کسی بھی وقت کاشت کی جاسکتی ہے البتہ بیج والی فصل کا موزوں وقت کاشت جولائی کامہینہ ہے ۔

انہوںنے بتایاکہ گوارے کی کاشت کیلئے گرم آب وہوا درکار ہوتی ہے جبکہ اس کی منظور شدہ اقسام بی آر 90 اور بی آر 99 پانی کی کمی کو کافی دیر تک برداشت کرنے کی صلاحیت رکھتی ہیں ۔انہوںنے کہاکہ کاشتکار چارے کی فصل کیلئے 20 سی25کلوگرام اور بیج والی فصل کیلئے 12سی15 کلوگرام فی ایکڑ بیج استعمال کرسکتے ہیں۔

متعلقہ عنوان :