پاکستان دہشت گردی کے خاتمے کے لیے شنگھائی تعاون تنظیم کے رکن ملکوں کے ساتھ تعاون کے لیے تیار ہے- تہمینہ جنجوعہ

پاکستان پہلی مرتبہ اجلاس کی میزبانی کررہا ہے ‘تین روزہ اجلاس میں چین، قازقستان ، کرغستان، بھارت ، روس، تاجکستان، ازبکستان اور پاکستان شریک ہیں

Mian Nadeem میاں محمد ندیم بدھ مئی 12:57

پاکستان دہشت گردی کے خاتمے کے لیے شنگھائی تعاون تنظیم کے رکن ملکوں ..
اسلام آباد(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔23 مئی۔2018ء) سیکرٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ نے کہا ہے کہ پاکستان دہشت گردی کے خاتمے کے لیے شنگھائی تعاون تنظیم کے رکن ملکوں کے ساتھ تعاون کے لیے تیار ہے اور رکن ملک پاکستان کے انسداد دہشت گردی کے تجربات سے فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔ اسلام آباد میں شنگھائی تعاون تنظیم کے انسداد دہشت گردی سے متعلق اجلاس میں سیکرٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ نے کہا کہ شنگھائی تعاون تنظیم خطے کی ترقی اور خوشحالی کے لیے اہم کردار ادا کرسکتی ہے کیونکہ تنظیم کا مقصد ممبر ملکوں کے درمیان امن اور سلامتی کے شعبوں میں تعاون اور روابط بڑھانا ہے، شنگھائی تعاون تنظیم میں باہمی تجارت، توانائی اور معاشی ترقی کے شعبوں میں تعاون بڑھانے کے بے پناہ مواقع موجود ہیں، پاکستان میں بنیادی ڈھانچے میں تیزی سے ہوتی ترقی کے ساتھ تجارت اور کاروبار کے بے پناہ مواقع موجود ہیں۔

(جاری ہے)

تہمینہ جنجوعہ نے کہا کہ پاکستان دہشت گردی سے سب سے زیادہ متاثر ملک ہے۔ پاکستان کو دہشت گردی کی جنگ میں 120رب ڈالر کا نقصان ہوا اور ہزاروں افراد نے جانیں قربان کی ہیں، پاکستان خطے کو درپیش دہشت گردی اور انتہا پسندی کے خطرات سے پوری طرح آگاہ ہے۔ ہم نے دہشت گردی کے خلاف مربوط پالیسی مرتب کی، ہم دہشت گردی کے خاتمے کے لیے ایس سی او ملکوں کے ساتھ تعاون کے لیے تیار ہیں اور رکن ملک پاکستان کے انسداد دہشت گردی کے تجربات سے فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔

شنگھائی تعاون تنظیم کے 23سے 25مئی تک ہونے والے اجلاس کی پاکستان پہلی مرتبہ میزبانی کر رہا ہے۔اس اہم اجلاس میں چین،، قازقستان ، کرغستان، بھارت ، روس،، تاجکستان، ازبکستان اور پاکستان کے قانونی ماہر ین کے علاوہ تنظیم کے آر اے ٹی ایس کی ایگزیکٹو کمیٹی کے نمائندے بھی شرکت کرینگے۔۔پاکستان اور بھارت کے درمیان موجودہ سیاسی صورت حال کے پیش نظر بھارت کی اجلاس میں شرکت پر سوالیہ نشانات موجود ہیں تاہم بھارتی سفارتی ذرائع نے تصدیق کی ہے کہ شنگھائی تعاون تنظیم کے تحت ہونے والے اس اہم اجلاس میں بھارتی وفد بھی شرکت کرے گا۔

شنگھائی تعاون تنظیم کی باضابطہ رکنیت کے بعد پاکستان میں ہونے والا یہ پہلا اجلاس ہے،اجلاس میں خطے کو درپیش دہشت گردی کے خطرات سے نمٹنے کے لئے غور کیا جائے گا۔ انسداد دہشت گردی کے حوالے سے رکن ممالک میں تعاون اور رابطے بڑھانے پر بھی غور ہوگا۔