پی آئی اے کو8ماہ کے دوران24ارب روپے سے زائد کا خسارہ

بدھ مئی 16:47

پی آئی اے کو8ماہ کے دوران24ارب روپے سے زائد کا خسارہ
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 مئی2018ء) پی آئی اے انتظامیہ کی ناقص حکمت عملی کے باعث ادارے کو اربوں روپے نقصان کا سامنا کرنا پڑا، ادارے کو 8 ماہ کے دوران آپریٹنگ لاس24ارب روپے سے زائد رہا۔تفصیلات کے مطابق پہلے ہی اربوں روپے خسارے سے دو چار اور مختلف اداروں کے نادہندہ قومی ادارے پی آئی اے کو ناقص حکمت عملی کے باعث آٹھ ماہ میں مجموعی طور پر35ارب 34 کروڑ سے زائد نقصان کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

(جاری ہے)

پی آئی اے کی موجودہ انتظامیہ نے اگست2017 میں ذمہ داریاں سنبھالی تھیں اور دعوے کیے تھے کہ ادارے کو نقصان سے نکالیں گے، موجودہ انتظامیہ کی ناتجربے کاری کے باعث ادارے کے خسارے کی اڑان میں مزید اضافہ ہوا۔اس حوالے ذرائع نے بتایاکہ پی آئی اے کو ستمبر2017میں دو ارب روپے سے زائد کا نقصان ہوا، اکتوبر میں نقصان کا اضافہ ہوکر چار ارب روپے سے تجاوز کرگیا، نومبر میں خسارہ چار ارب 51 کروڑ روپے سے زائد رہا۔دسمبر میں خسارہ 5 ارب روپے سے زائد ہوگیا، جنوری 2018 میں خسارہ 4ارب 25 کروڑ سے زائد رہا، فروری میں 4 ارب 63 کروڑ روپے کا نقصان ہوا، مارچ کا مہینہ بھی پی آئی اے کیلئے نقصان کا باعث رہا،6 ارب 16کروڑ کا نقصان ہوا، اپریل میں پی آئی اے کو 4ارب سے زائد کا نقصان ہوا۔

متعلقہ عنوان :