پی ٹی آئی کے رہنما عوام میں پذیرائی نہ ملنے کے باعث بوکھلاہٹ کا شکار ہیں ،مسلم لیگ (ن)کراچی ڈویژن

ہم نے کبھی اخلاقیات کا دامن ہاتھ سے نہیں چھوڑا، مخالفین کی تنقید کا جواب تہذیب کے دائرے میں دینا ہمارا شیوہ ہے،حاجی شاہجہاں،نور خان اخونزادہ تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان اور نعیم الحق اپنے ناشائستہ رویے پر فوری طور پر وفاقی وزیر دانیال عزیز سے معافی مانگیں ،عبدالرحیم اعوان ،مہناز اختر

بدھ مئی 18:16

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 مئی2018ء) پاکستان مسلم لیگ (ن) کراچی ڈویژن کے نائب صدر حاجی شاہجہاں ،جوائنٹ سیکرٹری نور خان اخونزادہ ،لیبر ونگ سندھ کے جنرل سیکرٹری عبدالرحیم اعوان ،شعبہ خواتین کراچی کی صدر مہناز اختر نے نجی ٹی وی کے پروگرام کے دوران تحریک انصاف کے رہنما نعیم الحق کی جانب سے وفاقی وزیر نجکاری دانیال عزیز کو زدوکوب کرنے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ پی ٹی آئی نے ملک سے شرافت کی سیاست کا جنازہ نکال دیا ہے ۔

پی ٹی آئی کے رہنما عوام میں پذیرائی نہ ملنے کے باعث بوکھلاہٹ کا شکار ہیں ،،نواز شریف کے بڑے جلسوں نے ان کی نیند یں حرام کردی ہیں اور وہ سچ سننے کے لیے تیار نہیں ہیں ۔اختلاف رائے کو برداشت نہ کرنے والی پی ٹی آئی کی قیادت کسی منہ سے ملک میں جمہوری اقدار کی باتیں کرتی ہے ۔

(جاری ہے)

عمران خان سمیت تحریک انصاف کی قیادت ناشائستہ رویے پر دانیال عزیز سے معافی مانگیں ۔

بدھ کو جاری بیان میں مسلم لیگی رہنماؤں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کی قیادت نے ہمیشہ ملک میں شائستگی کی سیاست کو فروغ دیا ہے ۔برے سے برے حالات میں بھی مسلم لیگی رہنماؤں نے کبھی اخلاقیات کا دامن ہاتھ سے نہیں چھوڑا اور مخالفین کی تنقید کا جواب تہذیب کا دائرے میں دینا ہمارا شیوہ ہے ۔انہوںنے کہا کہ نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں جس طرح پی ٹی آئی کے رہنما نعیم الحق نے وفاقی وزیر دانیال عزیز کوزدوکوب کا نشانہ بنایااور غیر پارلیمانی زبان کا استعمال کیا اس سے پی ٹی آئی کے رہنماؤں کی ذہنیت کھل کر سامنے آگئی ہے ۔

پی ٹی آئی کے رہنما اپنے قائد عمران خان کی طرح کسی آمر سے کم نہیں ہیں اور وہ اپنے سامنے کسی کی بات سننے کے لیے تیار نہیں ہیں ۔عوام کے سامنے پی ٹی آئی کے رہنماؤں کا چہرہ کھل کر سامنے آگیا ہے ۔انہوںنے مطالبہ کیا کہ تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان اور نعیم الحق اپنے ناشائستہ رویے پر فوری طور پر وفاقی وزیر دانیال عزیز سے معافی مانگیں ۔