انتہاء پسندی ، دہشت گردی اور فرقہ وارانہ تشدد کے خاتمے کیلئے پیغام پاکستان درست سمت قدم ہے ، حافظ طاہر اشرفی

پاکستان علماء کونسل پیغام پاکستان کو قانونی شکل دینے کیلئے ہر سطح پر مشاورت کا سلسلہ شروع کرے گی ، علماء و مشائخ کے وفود سے گفتگو

بدھ مئی 21:34

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 مئی2018ء) انتہاء پسندی ، دہشت گردی اور فرقہ وارانہ تشدد کے خاتمے کیلئے پیغام پاکستان درست سمت قدم ہے ، تمام مکاتب فکر کے علماء و مشائخ نے ہمیشہ دہشت گردی اور انتہاء پسندی کی مذمت کی ہے ، پاکستان علماء کونسل پیغام پاکستان کو قانونی شکل دینے کیلئے ہر سطح پر مشاورت کا سلسلہ شروع کرے گی ، یہ بات پاکستان علماء کونسل کے مرکزی چیئرمین اور وفاق المساجد پاکستان کے صدر حافظ محمد طاہر محمود اشرفی نے مختلف مکاتب فکر کے علماء و مشائخ کے وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کہی ، اس موقع پر مولانا عبد الکریم ندیم ، مولانا عبد الحمید وٹو ، قاضی مطیع اللہ سعیدی ، مولانا اسد اللہ فاروق ، مولانا محمد شفیع قاسمی ، مولانا اسعد زکریا ، حاجی طیب شاد قادری ،مولانا محمد اشفاق پتافی، مولانا اسید الرحمن سعید، مولانا احسان احمد حسینی بھی موجود تھے ، انہوں نے کہا کہ اسلام سلامتی اور اعتدال کا دین ہے اور اسلام غیر مسلموں کے حقوق کا اسلامی ریاست میں محافظ ہے ۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ 1990 ء سے شروع ہونے والا دہشت گردی کا سلسلہ مسلم اور غیر مسلم ممالک کی بقاء اور امن کیلئے خطرہ بنتا چلا جا رہا ہے اور انتہاء پسندی اور دہشت گردی کا واحد حل علماء ، مفکرین اور دانشوروں کا اسلام کی حقیقی تعلیمات کو عوام الناس اور نوجوان نسل تک پہنچانا ہے ۔ پاکستان علماء کونسل کے قائدین نے کہا کہ پیغام پاکستان تمام مکاتب فکر کے علماء اور مشائخ کی ایک مثبت سمت کوشش ہے جس کو مزید مشاورت کے بعد قانونی شکل دی جانی چاہیے اور پیغام پاکستان کی تعلیمات سے عوام الناس کو ہر سطح پر آگاہ کیا جا نا چاہیے ۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کے علماء اور مشائخ نے غیر مسلموں کے حقوق کیلئے ہمیشہ جدوجہد کی ہے اور پاکستان میں رہنے والے غیر مسلم بطور پاکستانی وہ تمام حقوق رکھتے ہیں جو ایک مسلمان پاکستانی کو حاصل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مدارس اور مساجد نے ہمیشہ امن اور اخوت کی تعلیم دی ہے اور پاکستان علماء کونسل کے پلیٹ فارم سے اسلام کی حقیقی تعلیمات کو عوام الناس اور نوجوان نسل تک پہنچانے کیلئے جدوجہد جاری رہے گی۔

متعلقہ عنوان :