حکومت اور اپوزیشن کااب تک نگران وزیراعظم پر اتفاق نہ ہونا افسوسناک ہے،سینیٹر مشتاق احمد خان

بدھ مئی 23:36

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 مئی2018ء) امیر جماعت اسلامی و صدر ملی یکجہتی کونسل خیبر پختونخوا سینیٹر مشتاق احمد خان نے کہاہے کہ حکومت اور اپوزیشن کااب تک نگران وزیراعظم پر اتفاق نہ ہونا افسوسناک ہے ، جب سیاستدان کسی معاملے پر متفق نہیںہوتے تو پھر فیصلے کہیں اور ہوتے ہیں، نگران وزیراعظم پر اب تک اتفاق ہو جانا چاہیے تھا اور اس عہدے کے لیے ایسے فرد پر اتفاق ضروری ہے جو غیر جانبدار اور بااعتماد ہو اور شفاف و غیر جانبدارانہ انتخابات کو یقینی بناسکے ۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے المرکزالاسلامی پشاور سے جاری کئے گئے بیان میں کیا ۔ سینیٹرمشتاق احمد خان نے کہاکہ موجودہ حکومت کے خاتمے میں چند ہی دن رہ گئے ہیں، اس لئے ضروری ہے کہ نگران وزیر اعظم کے نام کا اعلان جلد کیا جائے، اگر اپوزیشن اور حکومت کسی نام پر متفق نہیں ہورہیں تو الیکشن کمیشن کو آگے آکر نگران وزیراعظم کا اعلان کرنا چاہئے۔

(جاری ہے)

حکومت اور اپوزیشن کی ذمہ داری ہے کہ وہ مزید تاخیر کئے بنا عبوری دور کے وزیر اعظم کے لئے کسی نام پر متفق ہوں۔ انہوں نے کہا کہ ادھورا احتساب مزید خرابیوں کا باعث بنتاہے اس لیے احتساب کا عمل جلد مکمل ہوناچاہیے ۔ رمضان المبارک ذاتی احتساب کا بھی مہینہ ہے اس لیے سب کو اپنے گناہوں کی بخشش کے ساتھ ساتھ ملک کو کرپٹ قیادت سے نجات دلانے کا بھی عہد کرناچاہیے ۔

انہوںنے کہاکہ پاکستان میں ہر کوئی دوسرے کا احتساب چاہتاہے اب تیرا چور مردہ باد اور میرا چور زندہ باد کا رویہ چھوڑنا پڑے گا ۔ انہوںنے کہاکہ شفاف انتخابات کے لیے سیاسی جماعتوں کو بھی اپنے اندر شفافیت لانے کی ضرورت ہے ۔ اگر سیاسی پارٹیاں کرپٹ اور بد دیانت لوگوں کو امیدوار نہ بنائیں تو کرپشن اور دھونس دھاندلی ہمیشہ کے لئے ختم کی جاسکتی ہے۔